اگر ہمارے پاس کٹس ہوتیں تو اب تک عاصمہ قتل کیس حل ہوچکا ہوتا: فرانزک لیبارٹری

پشاور:قصور میں زینب کو زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کرنے والا سیریل کلر گرفتار کر لیا گیاہے تاہم دوسری جانب عاصمہ قتل کیس کا معمہ ابھی تک حل نہیں ہو پایا ہے اور اس میں ہونی والی پیش رفت بھی خاصی اطمینان بخش نہیں ہے ۔پشاور کی فرانزک لیبارٹری انتظامیہ کے ذرائع کے حوالے سے دعویٰ کیاہے کہ ڈی این اے کٹس زائدالمیعادہونے کی وجہ سے لیبارٹری مشینری بےکارپڑی ہے،ڈی این اے کٹس استعمال میں نہ لانے کی وجہ سے زائدالمیعاد ہوگئیں،کٹس 2سال قبل لیبارٹری کے قیام کے وقت خریدی گئی تھیں، ڈی این اے کٹس 6مہینے کے اندر زیراستعمال لاناہوتی ہے، نجی فرم کوتقریبا ًایک ماہ قبل21 ہزارڈالرزادا کیے گئے،نجی فرم نے ایک ماہ گزرجانے کے باوجود کٹس فراہم نہیں کیں ۔ لیباٹری انتظامیہ کا کہناہے کہ اگر ہمارے پاس کٹس ہوتیں تو اب تک عاصمہ قتل کیس حل ہوچکا ہوتا۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.