مبینہ بینک اکاﺅنٹس کے معاملے پر ملزم عمران علی کا موقف سامنےآ گیا

قصور میں زینب کو زیادتی کے بعد قتل کرنے والے ملزم عمران سے ابتدائی تفتیش کے دوران انتہائی اہم ترین انکشافات ہوئے ہیں تاہم اس کے علاوہ سوشل میڈیا پر فہرست گردش کر رہی ہے کہ ملز م کے کئی بینکس اکاﺅنٹس بھی ہیں جن میں لاکھوں یوروز ہیں تاہم اس کی حقیقت بھی سامنے آ چکی ہے جو کہ مکمل طور پر جعلی ہیں جس کے بعد اب ملزم عمران کا بھی بینک اکاونٹ کے حوالے سے موقف سامنے آ گیاہے ۔کہ ملزم عمران علی سے تفتیش کے دوران بینک اکاﺅنٹس کے حوالے سے سوال کیا گیا تو اس نے موقف اختیار کرتے ہوئے بتایا کہ اس نے کسی بینک میں کبھی کوئی اکاﺅنٹ نہیں کھولا ہے جبکہ اس کے جرائم میں نہ تو کوئی اس کا سہولت کار تھا اور نہ ہی ساتھی وہ اکیلا ہی یہ تمام وارداتیں کرتا تھا ،اس کا کہناتھا کہ اس نے کبھی اپنے پاس سمارٹ فون بھی نہیں رکھا اور نہ ہی کبھی استعمال کیا ۔ملزم نے دوران تفتیش پولیس کو جرائم جس جگہ کیے ان مقامات کا بھی بتا دیاہے ۔معروف صحافی ڈاکٹر شاہد مسعود نےدعویٰ کرتے ہوئے کہا کہ اس کے پچاس سے زائد بینک اکاﺅنٹس ہیں جن میں سولہ لاکھ یوروز کی رقم ہے جس کے بعد صحافی نے اس سے متعلق شواہد سپریم کورٹ میں جمع کروائے اور وزارت داخلہ کی جانب سے اس کی تحقیق کیلئے جے آئی ٹی بھی تشکیل دیدی گئی ہے جو کہ ان بینک اکاﺅنٹس کے علاوہ ہر پہلو کا باریک بینی سے جائزہ لے گی اور اصل حقائق کو سامنے لے کر آئے گی ۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.