سابق وزیراعظم نوازشریف کیخلاف العزیزیہ ریفرنس کی سماعت

اسلام آباد: سابق وزیراعظم نوازشریف کیخلاف العزیزیہ ریفرنس کی سماعت کا کیس کھول دیا گیا،احتساب عدالت کے جج محمد بشیرریفرنس کی سماعت کررہے ہیں،العزیزیہ سٹیل ملز ریفرنس میں گواہ ملک طیب نے اپنا بیان ریکارڈ کروایا ہے۔
چند روزہ پہلے سماعت کے دوران ایک نجی بینک سے تعلق رکھنے والے نیب کے گواہ ملک طیب نے عدالت میں نواز شریف کے بینک اکاؤنٹ سے  صفدر اور دیگر افراد کو جاری چیکس کی تفصیلات پیش کی تھیں۔
گزشتہ روز سماعت پر استغاثہ کے گواہ ملک طیب نے نوازشریف کے اکاؤنٹ سے مریم صفدرسمیت دیگرافرادکوجاری چیکس کی تفصیلات پیش کرتے ہوئے بتایا کہ مریم صفدرکو 13جون 2015کو 12ملین ،15نومبر 2015 کو 28.8ملین اور 14 اگست 2016 کو 19.5 ملین روپے کاچیک دیاگیا۔
گواہ  کہا کہ حسین نواز نے 20 نومبر2010 کو 90 ہزارڈالر،30جون 2010کو 60ہزار 500 ڈالرزاور20نومبر 2011کو 90ہزار ڈالرزنوازشریف کوبھیجے،مزید گواہ نے بتایا کہ 19اکتوبر 2012کونوازشریف نے3 بار 8لاکھ ڈالرزبینک سے نکلوائے اوریہ رقم پاکستانی کرنسی میں تبدیل کرکے اکاونٹ میں منتقل کرائی گئی۔
استغاثہ کے گواہ نے عدالت کو بتایا کہ 30 اپریل 2013کو 4چیکس سے10لاکھ ڈالرزپاکستانی کرنسی اکاو¿نٹ میں ٹرانسفرکئے۔
گواہ نے عدالت کو بتایا کہ اگست 2013 میں نوازشریف نے 4بارساڑھے 9لاکھ ڈالرزاکاؤنٹ میں منتقل کئے، 10مئی 2005 کونوازشریف نے اپنے اکاؤنٹ میں 5لاکھ ڈالرزٹرانسفرکئے۔
خیال رہے کہ عدالت نے سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم صفدر کو حاضری سے استثنیٰ دے رکھا ہے۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.