گجرات,گونگی بہری یتیم لڑکی سے چار افراد کی اجتماعی زیادتی

اوباش نوجوانوں نے جٹووکل کی 16 سالہ یتیم بچی کو بدفعلی کا نشانہ بنا ڈالااور دو ملزمان کو جیل بھجوادیاگیا تاہم لواحقین نے پولیس کی طرف سے ایک ملزم کو رعایت دینے کا الزام لگایا۔تھانہ سول لائن کے علاقہ جٹووکل میں 16 سالہ یتیم عیسائی لڑکی صبا ،جو سننے اور بولنے سے قاصر ہے،کو محلہ خوشی پورہ کے رہائشی ارسلان، شہباز، شعیب اور عبدالعزیز نے 23 دسمبر 2017ءکو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ متاثرہ لڑکی کی والدہ مدعیہ مقدمہ رخسانہ کوثر نے الزام لگایا ہے کہ پولیس چوکی جٹووکل نے ملزمان سے ساز باز کرکے تھانہ سول لائن میں لے جاکر غلط ایف آئی آر نمبری 1101/17 درج کروادی ہے جس میں چار ملزمان کی بجائے تین ملزمان کو نامزد کیا گیا ہےرخسانہ کوثر کا کہنا تھا کہ میرے خاوند کا نام ساجد مسیح تھا۔ ایف آئی آر میں میرے خاوند کا نام ساجد حسین اور واقعہ کا شہادتی مسلمان لڑکے محمد اویس کو میرا بیٹا لکھ دیا گیا۔ پولیس چوکی جٹووکل ہمیں مقدمہ کی پیروی کرنے پر سنگین نتائج کی دھمکیاں دے رہی ہے۔ رابطہ کرنے پر انچارج پولیس چوکی جٹووکل ریاض بوسال کا کہنا ہے کہ رخسانہ کوثر نے تین ملزمان کے خلاف خود مقدمہ درج کروایا، ملزمان ارسلان عرف شانی اور شہباز کو گرفتار کرکے جیل منتقل کردیا گیا ہے جبکہ ملزم شعیب کو بے گناہ ہونے پر چھوڑا گیا ہے۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.