روبوٹ کی ایک حرکت اسی پر بھاری پڑ گئی

 

سان فرانسسکو: روبوٹس کا ہماری زندگی میں عمل دخل ہر گزرنے والے دن کے ساتھ بڑھتا جا رہا ہے۔ یوں لگتا ہے کہ ایک دن یہ ہر وہ کام کر رہے ہوں گے، اچھا یا برا، جو آج صرف انسان کرتے ہیں۔ سچ تو یہ ہے کہ روبوٹس نے کچھ ایسی حرکتیں شروع کر بھی دی ہیں جو پہلے صرف انسان ہی انسان کے ساتھ کیا کرتا تھا۔ امریکا میں سیکیورٹی کیلئے تعینات کئے گئے ایک روبوٹ نے بھی کچھ ایسا ہی گل کھلایا ہے کہ اسے تعینات کرنے والی کمپنی اب اسے فارغ کرنے پر مجبور ہو گئی ہے۔ عجیب بات ہے کہ ایک مشین ہونے کے باوجود اس روبوٹ نے بھی کمزوروں کو ہی اپنا نشانہ بنایا اور کچھ ایسے لوگوں کے ناک میں دم کر دیا جو پہلے ہی بے گھر اور بے سہارا تھے۔

سانفرانسسکو سوسائٹی فار پریونشن آف کروئلٹی ٹو اینیملز‘ کی جانب سے عوامی مقامات پر مجرموں پر نظر رکھنے کے لئے ایک سیکیورٹی روبوٹ کو تعینات کیا گیا تھا ۔ خصوصاً توقع تھی کہ یہ روبوٹ سٹریٹ کرائم اور کار چوری جیسے جرائم میں ملوث افراد پر نظر رکھے گا لیکن یہ سب کو چھوڑ کر فٹ پاتھ پر سونے والے بے گھر افراد کے پیچھے پڑ گیا۔ یہ روبوٹ ڈیوٹی کے دوران مسلسل ان افرد کی نگرانی کرتا رہتا تھا اور ہمہ وقت انہی کے اردگرد منڈلاتا رہتا تھا ۔ بیچارے بے گھر افراد اس سے اتنے تنگ آئے کہ اسے اپنا دشمن سمجھنے لگے۔ بالآخر ایک روز ان کا صبر جواب دے گیا اور انہوں نے اکٹھے ہو کرروبوٹ پر کمبل ڈال کر اسے دبوچ لیا اور پھر اس کی خوب مرمت کی۔ غصے میں بپھرے بے گھر افراد نے اس کے سینسرز میں چٹنی ڈال کر اسے سبق سکھانے کی کوشش بھی کی تا کہ وہ دوبارہ کبھی ان کی نگرانی کے لئے نا آئے۔
خوش قسمتی سے یہ روبوٹ کچھ مار کھانے کے بعد واپس اپنی کمپنی پہنچنے میں کامیاب ہو گیا۔ کمپنی کو روبوٹ کی شکایات تو پہلے بھی مل چکی تھیں لیکن جب اس واقعے کا علم ہوا تو بالآخر اسے فارغ کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا۔ علاقے میں موجود بے گھر افراد نے اس فیصلے پر سکھ کی سانس لی ہے اور کمپنی کا شکریہ ادا کیا ہے۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.