اہم خبرِیں
نوجوانوں کے لیے انٹرن شپ پروگرام کا اعلان آصف علی زرداری کےخلاف چارج شیٹ جاری سینیٹ کمیٹی نے جسٹس رٹائرڈ جاوید اقبال کو طلب کرلیا نواز شریف نے احتساب عدالت کی کارروائی چیلنج کردی نواز شریف کواس حال میں پہنچانے والی مریم نواز ہے، شیخ رشید پاکستان کو کبھی تنہا نہیں چھوڑا، سعودی عرب حکومت کا پاکستانی واٹس ایپ بنانے کا منصوبہ اسٹاک ایکسچینج منفی ومثبت خبروں کی لپیٹ میں سائنسدانوں نے ’’سپر مِنی‘‘ پاور بینک تیار کرلیا بیکٹیریا کے نمونے لینے والابرقی کییپسول تیار صبا قمراوربلال سعید کی عبوری ضمانت منظور قومی ٹیم جارحانہ کرکٹ کھیلیں، انضمام الحق پاکستان کرکٹ ٹیم نے تمام ٹیموں کو پیچھے چھوڑ دیا بھارت کے یوم آزادی پر دنیا بھر میں یوم سیاہ منایا جا رہا ہے پاکستان قوم کوسلام محبت پیش کرتا ہوں، طیب اردگان آرمی چیف اور بل گیٹس میں ٹیلی فونک رابطہ پاکستان میں اقلیتوں کو عزت اوروقار دیا گیا ہے، فیاض الحسن چوہا... جوائنٹ ایکشن کمیٹی اسکول کھلوانے میں ناکام پروفیسر خالد مسعود گوندل کیلئے حکومت کا تمغہ حسن کارکردگی کا ا... یوم آزادی تقریب،184 شخصیات کیلئے پاکستان سول ایوارڈزکا اعلان

لائسینسز کی تحقیق کے بعد پاکستانی پائلٹس کو بحال کر دیا جائے گا

ملائشیا کی سول ایوی ایشن کے حکام نے کہا ہے کہ جیسے ہی پاکستانی حکام کی جانب سے پائلٹس کے لائسنسز کی تصدیق کی جائے گی پاکستانی پائلٹس کو بحال کر دیا جائے گا۔
گذشتہ ہفتے ہوابازی کے وزیر غلام سرور خان کے پائلٹس کے جعلی لائسنس کے متعلق بیان کے بعد پاکستان نے اپنے 30 فیصد پائلٹس کو گراؤنڈ کیا تھا۔
پاکستان کے پاس آٹھ سو 60 پائلٹس ہیں جن میں ایک سو سات غیر ملکی ایئر لائنز کے لیے کام کرتے ہیں۔
ملائشیا کے سول ایوی ایشن اتھارٹی کے ترجمان نریلا انیس رحیم نے عرب نیوز کو بتایا کہ پائلٹوں کے لائسنس کی تصدیق کے لیے ملائشیا کے سول ایوی ایشن نے پاکستانی سول ایوی ایشن کو دو خط بھیجے ہیں اور اس کے ساتھ پاکستانی حکام کو ان پائلٹس کی معطلی کے بارے میں بھی آگاہ کیا گیا ہے۔
نریلا انیس رحیم نے بتایا کہ پاکستانی سول ایوی ایشن کی جانب سے مزید معلومات کی فراہمی تک پاکستانی پائلٹس کے لائسنس معطل کیے گئے ہیں۔
یاد رہے کہ جمعرات کو ملائشیا کے ایوی ایشن کے محکمے نے مقامی ایئر لائنز کے ان پائلٹس کو عارضی طور پر معطل کر دیا تھا جن کے پاس پاکستانی سول ایوی ایشن اتھارٹی کے جاری کردہ لائسنس تھے۔
’ہم پاکستان سول ایوی ایشن کے جواب کا انتظار کر رہے ہیں۔ جیسے ہی سرکاری طور پر ان کے لائنسنس کی تصدیق ہوتی ہے، ہم پاکستانی پائلٹس کو فوری طور پر بحال کر دیں گے۔‘
ملائشیا کے سول ایوی ایشن کے سی ای او کیپٹن چیسٹر وو نے اعلان کیا تھا کہ مقامی ایئر لائن کے ساتھ کام کرنے والے 20 پاکستانی پائلٹس کو عارضی طور پر معطل کیا گیا ہے۔
نریلا انیس رحیم کے مطابق کہ یہ فیصلہ ملائشیا کے سول ایوی ایشن کی صنعت کی حفاظت اور مسافروں کی سکیورٹی کو یقینی بنانے کے لیے کیا گیا ہے۔
’ ہم نے اس بات کو یقینی بنانا ہے کہ اس ملک میں کام کرنے والے پائلٹس کے پاس صحیح لائسنس ہو جو ملائشیا کی سول ایسی ایشن کے قواعدوضوابط کے مطابق ہو۔‘
برطانیہ، یورپ اور ویتنام نے بھی پاکستانی پائلٹس کو معطل کیا ہے اور یورپی یونین نے پی آئی اے کی فلائٹس پر چھ ماہ کے لیے پابندی عائد کی ہے۔
ایوی ایشن کے ماہر رزل قمرالزمان نے عرب نیوز کو بتایا کہ ملائشیا نے ہمیشہ سرٹیفکیٹس کی اصلیت اور پائلٹس کی کوالیفکیشن سے متعلق سخت موقف اپنایا ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ مشترکہ طور پر پائلٹس کی تصدیق پاکستان اور ملائشیا کے ریگلویٹرز کے لیے ایک بہترین موقع ہے کہ مشکوک کوالیفکیشن والے پائلٹس کو نہ رکھا جائے۔

رزل قمرالزمان کا کہنا تھا کہ دیگر ممالک کے ہوابازی کے ادارے پاکستان سے سبق سیکھے۔
’ریگولیٹرز کے درمیان اعتماد اور ایک دوسرے کو تسلیم کرنا جہاز، پائلٹس، انجینیئرز اور مسافروں کی حفاظت یقینی بنانے کے لیے ایک مقدس معاہدہ ہے جس پر دنیا میں کہیں بھی کمپرومائز نہیں کیا جاتا۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

تبصرے بند ہیں.