Latest news

دو ایٹمی طاقتوں میں جنگ کی گنجائش نہیں ہوتی، ڈی جی آئی ایس پی آر

دو ایٹمی طاقتوں میں جنگ کی گنجائش نہیں ہوتی، ڈی جی آئی ایس پی آر

راولپنڈی: انٹر سروسز پبلک ریلیشنز کے ڈائریکٹر جنرل (آئی ایس پی آر) میجر جنرل بابر افتخار نے اپنی پہلی پریس کانفرنس میں  کہا ہے کہ جب بھی ملک پر کڑا وقت آیا ہماری افواج نے بہادری کا مظاہرہ کیا۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ ایک سال قبل ایسی روز پاک بھارت جنگ دستک دے چکی تھی، پاکستان پر بھارت نے دن کی روشنی میں حملے کی کوشش کی۔

اپنے اندورنی انتشارسے توجہ ہٹانے کیلئے بھارت جو کھیل کھیل رہا ہے پاکستان کو اس کا مکمل ادراک ہے۔

ہمیں ایل او سی پر بھارت کی طرف سے خطرات کا سامنا ہے، بھارت کی اشتعال انگیزیاں خطے کے لیے بھی خطرہ ہے، بھارت نے ایل او سی پر سب سے زیادہ سیز فائر کی خلاف ورزیاں کی ہیں۔

بھارت کی سیاسی اور فوجی قیادت کے بیانات غیر ذمہ دارانہ ہے۔ اگر جنگ چھڑی تو اس کے نتائج بھیانک ہوں گے۔

ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ پہلی بات یہ ہے کہ دو ایٹمی طاقتوں کے درمیان جنگ کی کوئی گنجائش نہیں ہوتی اور یہ خطہ بھی جنگ کا متحمل نہیں ہوسکتا، ہماری کوشش یہی ہے کہ امن کا راستہ اپنایا جائے لیکن ہم بھارت کی طرف سے آنے والے بیانات کو بھی انتہائی سنجیدہ لیتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بھارت کی تمام  تیاریوں پر پاکستان کی نظر ہے اور ہم بھی 100 فیصد تیاری کے ساتھ بیٹھے ہیں اور اپنے ملک پر کوئی آنچ نہیں آنے دیں گے۔

میجر جنرل بابر افتخار نے کہا کہ ہماری افواج باصلاحیت ہیں اور ان کی صلاحیتوں کو مزید نہ آزمایہ جائے۔ مسئلہ کشمیر کے سوال پر ان کا کہنا تھا کہ فوج بالکل تیار ہے لیکن فیصلہ جو بھی ہو وہ سیاسی قیادت کرے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی فوج 24 گھنٹے تیار ہے آگے کیا کرنا ہے وہ فیصلہ حکومت نے کرنا ہے۔

افغان امریکہ معاہدے کے متعلق ان کا کہنا تھا کہ فی الحال تعطل کی کوئی اطلاع نہیں اور ہم بھی چاہتے ہیں خطے میں امن قائم ہو اور معاہدے کے مثبت نتائج برآمد ہو گے۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.