وائٹ ہاؤس کی جانب سے ترکی کو دھمکی آمیز خط

ترکی کی جانب سے شام میں امریکی حمایت یافتہ کرد جنجگوؤں کیخلاف عسکری کارروائیوں میں تیزی پر انقرہ اور واشنگٹن حکومتوں کے درمیان کشیدگی میں اضافہ ہو گیا ہے۔غیر ملکی ذرائع کے مطابق جمعہ کو وائٹ ہاؤس کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا کہ ترکی

ایسی کوئی کارروائی نہ کرے، جس کی وجہ سے امریکی اور ترک فورسز میں تصادم کا خطرہ ہو۔واضح رہے کہ اسی تناظر میں گزشتہ روز کو امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے ترک ہم منصب رجب طیب اردوآن سے ٹیلی فون پر گفتگو بھی کی۔ امریکی کی جانب سے شامی علاقے عفرین اور گرد نواح میں ترک فورسز کے آپریشن پر خدشات کے باوجود انقرہ حکومت وہاں مزید ٹینک اور فوجی ارسال کر رہی ہے۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.