ایران میں حکومت مخالف پرتشدد مظاہروں میں 2 افراد ہلاک، درجنوں زخمی

تہران: ایران میں مسلسل تیسرے روز حکومت مخالف مظاہروں کا سلسلہ جاری ہے جب کہ پرتشدد مظاہروں میں 2 افراد ہلاک اور 50 سے زائد زخمی ہوگئے۔ایران کے مغربی شہر دورود میں ایرانی حکومت کی پالیسیوں کے خلاف آج تیسرے روز بھی احتجاج کیا جارہا ہے۔جمعہ سے شروع ہونے والے حکومت مخالف مظاہروں میں گزشتہ روز پولیس اور مظاہرین کے درمیان شدید جھڑپیں ہوئیں جس کے نتیجے میں 50 سے زائد افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔ ایرانی پولیس کی فائرنگ سے زخمی ہونے والے افراد کی تصاویر اور ویڈیو سوشل میڈیا پر پھیل چکی ہیں جب کہ خبر ایجنسی رائٹر کا کہنا ہے کہ پولیس کی فائرنگ کے نتیجے میں 2 مظاہرین بھی ہلاک ہوئے۔  دوسری جانب حکومت نے شہریوں خبردار کیا ہے کہ وہ احتجاج یا مظاہروں میں شرکت نہ کریں جب کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ جابرانہ ریاستیں ہمیشہ قائم نہیں رہ سکتیں، دنیا ساری صورت حال کو دیکھ رہی ہے۔امریکی صدر کے بیان پر ایران کی جانب سے شدید ردعمل کا اظہار کیا گیا اور کہا کہ ایرانی عوام گھٹیا دھوکے باز ہتھکنڈوں میں نہیں آتے۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.