Daily Taqat

ترک صدر نے سعودی صحافی کی باقیات سامنے لانے کا مطالبہ کردیا

ترکی کے صدر رجب طیب اردوان نے سعودی عرب کے صحافی جمال خاشقجی کی باقیات سامنے لانے کا مطالبہ کردیا۔ غیر ملکی ذرائع کے مطابق ترک صدر رجیب طیب اردوان نے سعودی عرب سے صحافی جمال خاشقجی کی باقیات سامنے لانے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ جمال خاشقجی کے قتل کا حکم دینے والے کا نام بھی سامنے لایا جائے۔

ترک صدر کا کہنا تھا کہ ترکی کے پاس اس کیس سے متعلق مزید معلومات بھی ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ گرفتار کیے گیے 18 لوگ جانتے ہیں کہ خاشقجی کا قتل کس نے کیا، مجرم بھی ان میں سے ہیں اس لیے تفصیل نہیں بتاسکتے۔ طیب اردوان نے سوال اُٹھایا کہ ان 18 افراد کو ترکی میں داخل ہونے کا حکم کس نے دیا، ترک پبلک پراسیکیوٹر استنبول کے پراسیکیوٹر سے اتوار کو ملاقات کریں گے۔

واضح رہے جمال خاشقجی دو اکتوبر کو استنبول میں واقع سعودی قونصل خانے گئے تھے، جس کے بعد وہ لاپتہ ہوگئے۔ تاہم سعودی حکام صحافی کی گمشدگی کے متعلق غلط وضاحتیں دیتا رہا اور دو ہفتے تک حقائق کی پردہ پوشی کرتا رہا۔ جس کے بعد یہ بات سامنے آئی تھی کہ سعودی صحافی کو ترکی میں سعودی قونصل خانے میں قتل کردیا گیا تھا، بعد ازاں امریکی صدر نے اس واقعے کی شدید مذمت کی تھی۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »