ترک صدر کا امریکا، اسرائیل پر پاکستان اور ایران میں ’مداخلت‘ کا الزام

ترک صدر طیب اردوان نے کہا ہے کہ امریکا اور اسرائیل پاکستان اور ایران کے داخلی معاملات میں ’مداخلت‘ کر رہے ہیں۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی پاکستان مخالف ٹوئٹ کے بعد سے دونوں ملکوں کے تعلقات تناؤ کا شکار ہیں۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے یکم جنوری کو ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں پاکستان کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا تھا کہ ہم نے گزشتہ 15 سالوں کے دوران پاکستان کو 33 ملین ڈالر امداد دے کر حماقت کی جب کہ بدلے میں پاکستان نے ہمیں دھوکے اور جھوٹ کے سوا کچھ نہیں دیا۔

ایران نے بھی ملک میں حالیہ پرتشدد مظاہروں کے بعد امریکا پر داخلی معاملات میں مداخلت کا الزام عائد کیا تھا۔ترکی اور پاکستان کے ہمسایہ ملک ایران میں مہنگائی کے خلاف کئی روز تک جاری رہنے والے پرتشدد مظاہروں میں 21 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

ترک صدر رجب طیب اردوان نے فرانس کے دورے پر روانہ ہونے سے قبل انقرہ میں ایک نیوز بریفنگ کے دوران امریکا اور اسرائیل پر پاکستان اور ایران کے داخلی معاملات میں مداخلت کا الزام عائد کیا ہے۔

صدر اردوان کا کہنا تھا کہ چند ممالک کی ایران اور پاکستان کے داخلی معاملات میں مداخلت کو برداشت نہیں کیا جاسکتا جن میں امریکا اور اسرائیل سر فہرست ہیں۔

اردوان نے کہا کہ’یہ ان ممالک میں لوگوں کو ایک دوسرے کے خلاف کرنا ہے، یہ شرمناک چیز ہم نے عراق سمیت کئی ممالک میں ہوتے دیکھی ہے۔‘

ترک صدر نے شام، فلسطین، مصر، لیبیا، تیونس اور افریقی ممالک بشمول سوڈان اور چاڈ کے مسائل کو بھی اسی سے جوڑا۔

انہوں نے دعویٰ کیا کہ کئی مسلم اکثریتی ممالک میں یہ کھیل کھیلا جا رہا ہے جس کا علم تمام لوگوں کو ہونا چاہیے۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.