Daily Taqat

چین اور ہانگ کانگ کے درمیان پہلا تیز رفتار ریل لنک متعارف کرا دیا گیا

ہانگ کانگ اور چین کے درمیان پہلے تیز رفتار ریل لنک کا آغاز کر دیا گیا ہے، جس کے ذریعے ٹرین پہلے سے کم وقت میں چین کے شہروں میں پہنچ جائے گی۔ ایکسپریس ریل لنک کے تحت ہانگ کانگ سے جنوبی چین کے شہر گونگژوا روانہ ہونے والی ٹرین صرف 40 منٹ میں فاصلہ طے کر سکتی ہے، یعنی پرانی ٹرینوں کے مقابلے میں جلد فاصلہ طے کر سکتی ہے۔

یہ ریل لنک گزشتہ روز ایک تقریب میں متعارف کرائی گئی ہے، جس پر ایک مقامی قانون دان کا کہنا تھا کہ گونگژوا کا سفر اتنا آرام دہ تھا کہ جیسے جہاز کا سفر ہو۔ حکام کا کہنا ہے کہ یہ ریل لنک ہانگ کانگ، شینژن اور گونگژوا کے کاروبار کو بڑھائے گا۔ اس لنک کو چینی حکام مشترکہ طور پر چیک پوائنٹس، اسٹیشنز اور ٹرین سے چلانے کی اہلیت رکھیں گے۔

یہ پہلی مرتبہ ہوگا کہ جو قانون چین میں ریلوے کے لیے نافذ کیے گئے ہیں انہیں پر ہانگ کانگ کا ریل لنک بھی چلے گا۔ یہی وجہ ہے کہ اس پر کچھ افراد تنقید کر رہے ہیں، جن کا کہنا ہے کہ یہ ہانگ کانگ کی آزادی اور آئین پر حملہ ہے۔ دوسری جانب ہانگ کانگ کے جمہوریت پسند قانون سازوں نے اس ریل لنک کی متعارف کی جانے والی تقریب میں شرکت سے انکار کیا اور احتجاج کیا کہ یہ ہانگ کانگ کی قانونی آزادی پر اثر اندا ہو رہا ہے۔ تاہم ریل لنک کا آغاز عوام کے لیے اتوار سے ہو گیا ہے جو چین کے متعدد علاقوں سے لنک کرے گا، جن میں دارالحکومت بیجنگ بھی شامل ہے۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »