ڈونلڈ ٹرمپ کے خلاف دنیا بھر میں احتجاج

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے منفی اعلان کےبعد پاکستان سمیت دنیا بھر میں بھرپور احتجاج کیا جا رہا ہے۔  پاکستان نے اس معاملے کو عالمی قوانین کی خلاف ورزی قرار  دے دیا اور  ڈونلڈ ٹرمپ کو اپنا فیصلہ واپس لینے کا بھی مطالبہ کر دیا۔

امریکی صدر کے اعلان کے بعد پاکستان میں آج نماز جمعہ کے بعد جماعت اسلامی سمیت دیگر مذہبی جماعتوں اور تنظیموں نے احتجاج کا اعلان کیا ہے۔

جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق  نے ملک گیر احتجاج کا اعلان کرتے ہوئےکہا کہ ٹرمپ کا القدس کو اسرائیلی دارالحکومت قراردینا جلتی پر تیل ڈالنا ہے ڈونلڈ ٹرمپ نے عالمی امن کو خطرے میں ڈال دیا ہے، مسلم حکمران متحد ہوکر امریکی فیصلے کے خلاف لائحہ عمل دیں۔

ادھر لاہور میں طلبہ تنظیم نے امریکی صدر کے فیصلے کے خلاف امریکی قونصلیٹ کے باہر احتجاج کیا اور امریکا  کے خلاف  نعرے بھی لگائے مظاہرین نے مطالبہ کیا کہ بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالخلافہ تسلیم کرنےکا اعلان واپس لیا جائے، اگر اعلان واپس نہ لیا گیا تو احتجاج کا سلسلہ جاری رکھا جائے گا۔

پولیس نے طلبہ تنظیم کے احتجاج کے باعث سیکیورٹی خدشات کے پیش نظر امریکی قونصلیٹ کے راستے سیل کردیئے، قونصلیٹ کے گرد کنٹینرز   بھی لگا دئیے گئے  پولیس کی بھاری نفری تعینات کردی گئی۔

اسلام آباد بار کونسل کی جانب سے بھی امریکی فیصلے کے خلاف احتجاج کیا گیا جس میں وکلا کی بڑی تعداد نے ایف ایٹ کچہری میں احتجاج کیا اور امریکا کےخلاف شدید نعرے بازی کی۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.