شہزادہ الولید بن طلال کو رہا کردیا گیا

ریاض : سعودی عرب کے امیر ترین شہزادے الولید بن طلال کی حکومت سے ڈیل ہوگئی، تقریباً 3 ماہ سے گرفتار کھرب پتی شہزادے کو رہا کردیا گیا۔

سعودی عرب میں انسداد بدعنوانی مہم کے دوران گرفتار کھرب پتی شہزادہ ولید بن طلال کو حکومت سے ڈیل کے بعد رہا کردیا گیا، ان پر کروڑوں ڈالرز کی کرپشن کا الزام تھا۔

رپورٹ کے مطابق سعودی اٹارنی جنرل نے 62 سالہ شہزادہ الولید بن طلال کی حکومت کے ساتھ ہونے والے سمجھوتے کی منظوری دی، جس کے بعد کھرب پتی سعودی شہزادے کی رہائی کی راہ ہموار ہوئی. واضح رہے کہ سعودی حکومت میں بدعنوانی کے الزام میں گرفتار 200 شہزادوں کی سمجھوتے کے تحت رہائی کا عمل جاری ہے.  رپورٹ کے مطابق سعودی عرب میں کرپشن الزامات میں گرفتار سعودی تاجر ولید البراہیم، فوازالحکیر، شہزادہ ترکی بن ناصر اور خالد التویجری نے بھی حکومت سے ڈیل کرلی، جس کے بعد انہیں بھی رہا کردیا گیا ہے۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.