وزیراعظم عباسی سے انڈونیشئن صدر کی ملاقات،پاکستان کی سرمایہ کاری کی دعوت، دفاعی معاملات مضبوط بنانے پر اتفاق

اسلام آباد: وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سے انڈونیشیا کے صدر جوکووڈوڈو نے وزیراعظم ہاﺅس میں ملاقات کی جس دوران دونوں ممالک نے دہشتگردی کیخلاف تعاون ، سیکیورٹی و دفاع کے معاملات کو مزید مضبوط کرنے، باہمی تجارت کوفروغ دینے پر اتفاق کیاگیا، پاکستان نے انڈونیشین سرمایہ کاروں کو دعوت دی ہے کہ وہ سی پیک کے تحت پیداہونیوالے سرمایہ کاری کے مواقع سے فائدہ اٹھائیں، دونوں ممالک کے درمیان ایل این جی ، تجارت اور تعلیم سمیت مختلف شعبوں میں معاہدوں کی یادداشتوں پر دستخط بھی کیے گئے ۔
تفصیلات کے مطابق وزیراعظم ہاﺅس آمد پر مہمان صدر کو گارڈ آف آنر پیش کیاگیاجس کے بعد دونوں ممالک کے نمائندگان کے درمیان باہمی تعلقات، عالمی و علاقائی معاملات پر وفود کی سطح پر تبادلہ خیال ہوا ، دونوںممالک نے عزم دوہرایا کہ پاکستان اور انڈونیشاءکے عوام باہمی کلچر، مذہبی معاملات اور جمہوری اقدار کیلئے روایات مشترک ہیں،اسلامی دنیا کا بڑا ملک ہونے کے ناطے دونوں ممالک کو اپنی ترقی، خوشحالی ، استحکام ، سیکیورٹی اور خودمختاری کیلئے ایک دوسرے کے ساتھ کھڑے ہیں۔
دفاع اور سیکیورٹی کے معاملات مضبوط کرنے پر اتفاق کرنے کے علاوہ دونوں ممالک کے رہنماﺅں نے عزم کیا کہ دہشتگردی کیخلاف تعاون کو فروغ دیاجائے گا۔ وزیراعظم عباسی نے مہمان صدر کو پاکستان کی دہشتگردی کیخلاف کاوشوں پر بریفنگ دی اوریہ بھی اتفاق کیاگیا کہ تجارت میں عدم توازن کو ختم کرکے بہتری کی ضرورت ہے اور فری ٹریڈ تک مل کر کام کرنے پر اتفاق کیاگیا۔
انڈونیشیاءنے پاکستان کو یقین دہانی کرائی ہے کہ وہ انڈین اوشن رم ایسوسی ایشن( آئی اوآراے) میں پاکستان کی حمایت کرے گا۔ وزیر اعظم عباسی نے مہمان صدر کو راہداری منصوبے اور علاقائی رابطے بڑھانے کیلئے پاکستان کی کاوشوں پر بھی بریفنگ دی اور دعوت دی کہ انڈونیشئن سرمایہ کار سی پیک میں سرمایہ کاری کے مواقع سے فائدہ اٹھاسکتے ہیں۔
علاقائی صورتحال پر تبادلہ خیال کے دوران عباسی نے افغانستان میں امن کیلئے پاکستانی کاوشوں سے آگاہ کیا اورانڈونیشیاءکی کاشوں کو بھی سراہا، اسی طرح مہمان وفد کو مقبوضہ کشمیر سمیت بھارت کیساتھ دیگر مسائل کے حل کے لیے پاکستان کی طرف سے اٹھائے گئے اقدامات پر بھی بریف کیا۔
دونوں ممالک کے نمائندگان کے درمیان ملاقات کے بعدایل این جی ، دیگر پٹرولیم مصنوعات ، تجارت اور فارن سروس اکیڈمی سمیت مختلف معاہدوں کی باہمی یادداشتوں پر بھی دستخط ہوئے ۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.