قاتل گیم ‘بلیو وھیل’ نے بھارت میں ایک اور نوجوان کی جان لے لی

نئی دہلی: بھارت میں قاتل گیم ‘بلیو وھیل’ کے چیلنج نے ایک اور نوجوان کی زندگی کا خاتمہ کردیا۔

حیدرآباد کے علاقے میپل ٹاؤن میں ایک نوجوان نے سر پر پلاسٹک بیگ پہن کر اپنی جان لے لی جب کہ پولیس نے شبہ ظاہر کیا ہے کہ نوجوان نے بلیو وھیل گیم کا چیلنج مکمل کرتے ہوئے اپنی جان خطرے میں ڈالی اور وہ جانبر نہ ہوسکا۔

پولیس کے مطابق 19 سالہ ورون برلا انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی اینڈ سائنس کا طالبعلم ہے جو ہفتہ کی صبح اپنے کمرے میں مردہ حالت میں پایا گیا جب کہ اس کا منہ پلاسٹک بیگ سے ڈھکا ہوا تھا اور وہ دم گھٹنے کے باعث ہلاک ہوا۔

پولیس سب انسپکٹر ونکت ریڈی کا کہنا ہے کہ ورون کی گردن کے گرد پلاسٹک کی تھیلی زور سے کس کر باندھی گئی تھی اور ابتدائی تحقیقات سے خودکشی کا کوئی سراغ نہیں ملا جب کہ متاثرہ نوجوان کا موبائل فون ڈیٹا فرانزک کے لئے بھجوا دیا گیا ہے۔

19 سالہ نوجوان کے والدین کا کہنا ہے کہ ورون بیشتر وقت باہر گھومنے پھرنے کے بجائے موبائل اور لیپ ٹاپ پر گزارتا تھا اور ایک ہفتے قبل ہی وہ ہاسٹل سے گھر آیا تھا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ والدین کے بیانات کی روشنی میں کہا جاسکتا ہے کہ ورون ممکنہ طور پر بلیو وھیل چیلنج گیم کھیل رہا تھا اور چیلنج کو مکمل کرتے ہوئے اس نے اپنی جان لی تاہم مقدمہ درج کرتے ہوئے تحقیقات کا دائرہ وسیع کردیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ اس سے قبل بھی بھارت میں بلیو وھیل گیم کا چیلنج مکمل کرنے کے دوران نوجوانوں کی ہلاکت کے واقعات رپورٹ ہوچکے ہیں۔

اسی طرح کا ایک واقعہ اگست 2017 میں ریاست مغربی بنگال کے علاقے آنند پور سے رپورٹ ہوا جہاں 14 سالہ نوجوان آنکن دیا نے بلیو وھیل گیم کا آخری چیلنج مکمل کرنے کی غرض سے اپنی گردن پر پلاسٹک بیگ چڑھایا اور بعدازاں اس کی لاش باتھ روم سے ملی۔

ریاست گجرات کے ضلع پالن پور میں بھی 31 اگست کو 30 سالہ شخص اشوک ملونا نے فیس بک ویڈیو بنائی جس میں اس نے کہا کہ وہ بلیو وھیل گیم کا آخری چیلنج پورا کرتے ہوئے گہرے دریا میں چھلانگ لگا رہا ہے اور بعدازاں دریا سے اس کی لاش برآمد کی گئی۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.