اسرائیل بچوں کا قتل عام کرتا ہے، رجب طیب اردوغان

 استنبول: امریکی سفارت خانے کی یروشلم منتقلی اور اسرائیل کو تسلیم کرنے کے متنازع فیصلے کے بعد ترکی اور اسرائیل کے تعلقات میں کشیدگی مزید بڑھ گئی ہے، اس حوالے سے ترک صدر رجب طیب اردوغان اور اسرائیلی وزیر اعظم بن یامین نتن یاہو کے تلخ بیانات سامنے آئے ہیں۔

ترکی کے دارالحکومت استنبول میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے رجب طیب اردوغان نے کہا کہ اسرائیل ایک دہشت گرد ریاست ہے جو بچوں کو قتل کرتی ہے۔

انہوں نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کے یک طرفہ فیصلے کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اس کیخلاف لڑنے کا اعلان کیا۔

ترک صدر کے بیان کے تھوڑی دیر بعد ہی اسرائیلی وزیر اعظم نے بھی جواب دیتے ہوئے کہا کہ وہ ایسے لیڈر سے لیکچر نہیں لیں گے جو کردستان کے دیہاتوں پر بم برساتا ہے اور دہشت گردوںکی معاونت کرتا ہے۔

ترک صدر نے کہ فلسطین بالکل معصوم ہے اور اسرائیل ایک دہشت گرد ریاست ہے، رجب طیب اردوغان نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ وہ یروشلم کو ایک ایسی ریاست کے رحم و کرم پر ہرگز نہیں چھوڑیں گے جو بچوں کا قتل عام کرتی ہو۔

ڈونلڈ ٹرمپ کے متنازعہ فیصلے سے قبل تک دونوں ممالک کے تعلقات میں کافی حد تک بہتری آگئی تھی لیکن اب صورتحال بالکل مختلف ہونے کے ساتھ کشیدگی کی جانب جاتی نظر آرہی ہے۔

امریکی فیصلے کے بعد ترکی کے عوام نے سب سے پہلے غم و غصہ کا اظہار کرتے ہوئے انقرا میں قائم امریکی سفارت خانے کے سامنے احتجاج کیا


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.