بھارت: حوس کے پجاریوں نے حد ہی کردی جوتوں سے لڑکیوں کی ویڈیو بنانے والاشخص پکڑا گیا

نئی دلی: بری سوچ رکھنے والے لوگ عورتوں کو ہراساں کرنے کیلئے نت نئی ایجادات ڈھونڈتے رہتے  ہیں۔ بیت الخلاﺅں سے لے کر چینجنگ رومز تک چھپائے گئے خفیہ کیمرے اور قلم میں لگے جاسوس کیمروں تک خواتین کو ہراساں کرنے اور بلیک میل کرنے کے ہزاروں طریقے ہیں اور یہ سب چیزیں مارکیٹ میں باآسانی دستیاب ہوجاتی ہیں۔

اس طرح کے اوچھے ہتھکنڈوں کا قلع قمع کرنے کیلئے جاپان نے حال ہی میں جوتوں میں چھپائے جانے والے جاسوس کیمروں پر پابندی عائد کی ہے کیونکہ ان کے ذریعے خواتین کی سکرٹس کے نیچے سے تصاویر بنائی جاتی تھیں ، اسی طرح کی حرکت کرتا ہوا ایک شخص برطانیہ میں بھی گرفتار ہوچکا ہے، اب بھارتی ریاست کیرالہ میں بھی ایسے ہی ایک شخص کو گرفتار کیا گیا ہے۔بیجو نامی یہ ہوس کا پجاری عوامی مقامات پر بھٹک رہا تھا اور بار بار اپنے پاﺅں کے اوپر فوکس کر رہا تھا، جس کی وجہ سے شک گزرنے پر اسے پکڑا گیا۔ جب اس کی تلاشی لی گئی تو پتہ چلا کہ موصوف نے اپنے جوتے میں خفیہ کیمرہ چھپا رکھا ہے۔جب مزید تحقیق کی گئی تو یہ بات سامنے آئی کہ ملزم نے اپنا موبائل فون اپنے جوتے میں چھپا رکھا ہے اور اس کے اوپر ایک لوہے کا خول بھی چڑھا رکھا ہے تاکہ وزن پڑنے کے باعث موبائل فون ٹوٹ پھوٹ سے محفوظ رہے۔ ملزم عوامی مقامات پر ایسی خواتین کے پاس جاتا جنہوں نے سکرٹ پہنی ہوتی تھی ، اور ان کی اپنے جوتے میں چھپے ہوئے کیمرے کے ذریعے سکرٹ کے نیچے سے ویڈیو بناتا تھا۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.