اہم خبرِیں
پنجاب حکومت 50 کروڑ ڈالرقرض لے گی پارک لین ریفرنس، آصف زرداری کی درخواست مسترد لڑکی کی لڑکی سے شادی کیس، دلہا کا نام ای سی ایل میں شامل بھارت میں سیکڑوں مساجد مندروں میں تبدیل نوازشریف کو سزا دینے والے جج برطرف ایم ایل ون منصوبہ میری زندگی کا مشن تھا، شیخ رشید پاکستان کا نیا نقشہ گوگل سمیت تمام سرچ انجنز کو بھجوانے کا فیص... حکومت کا ہوٹل، پارکس، سیاحتی مقامات کھولنے کا اعلان ملک میں کوروناکیسزمیں کمی، 21 اموات رپورٹ آبی ذخائر میں پانی کی آمد و اخراج کی صورتحال کلبھوشن یادیو کے معاملے پر پاکستان کا بھارت سے پھررابطہ احساس پروگرام کے تحت 169 ارب روپے تقسیم پاکستان نے سعوی عرب کا قرضہ واپس کر دیا پاکستان کو 40 کروڑ ڈالر قرضوں کی منظوری برطانوی خلائی کمپنی "سپر سانک" کمرشل طیارہ بھی بنائے گی اولڈٹریفورڈ ٹیسٹ، پاکستان 139 رنز سے اننگز آگے بڑھائے گا بیروت دھماکے، ہنگامی حالت کا نفاذ شہباز شریف اور حمزہ شہباز پر فرد جرم عائد پاکستان کی درخواست پرسلامتی کونسل کا ایمرجنسی اجلاس پاک افغان بارڈر پربھاری ہتھیاروں سے فائرنگ

بنگلا دیش میں کورونا وائرس کے جعلی سرٹیفکیٹس،اسپتال بند، مالک سمیت ہیلتھ ورکرز گرفتار

ڈھاکا: بنگلا دیش میں کورونا وائرس کے جعلی سرٹیفکیٹس جاری کرنے پر اسپتال کو بند کرکے اس کے مالک سمیت متعدد ہیلتھ ورکرز کو گرفتار کرلیا گیا۔

حکام نے ڈھاکا میں کورونا وائرس منفی کے ہزاروں جعلی سرٹیفکیٹس جاری کرنے پر متعدد ہیلتھ ورکرز کو گرفتار کیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق ریپیڈ ایکشن بٹالین نے ڈھاکا کے ریجنٹ اسپتال پر چھاپہ مارا جس میں یہ اسکینڈل سامنے آیا اور یہ اسپتال ان نجی اسپتالوں میں شامل ہے جنہیں حکومت نے کورونا کے مریضوں کے علاج کے لیے منتخب کیا تھا۔

ترجمان اینٹی کرائم یونٹ کا کہنا تھا کہ اسپتال نے ٹیسٹنگ کے لیے 10 ہزار سے زائد نمونے اکٹھا کیے لیکن صرف 4200 ٹیسٹ کیے جب کہ اسپتال نے تمام نمونوں کی رپورٹس جاری کردیں۔

ترجمان نے مزید کہا کہ ریجنٹ اسپتال نے اپنے کمپیوٹر لیب میں کورونا وائرس کی جعلی رپورٹیں تیار کیں۔

ترجمان کے مطابق اسپتال کی رجسٹریشن 2014 میں ختم ہوگئی تھی جس کے بعد اسپتال کو غیر قانونی طور پر چلایا جارہا تھا جب کہ اسپتال میں کورونا کے ٹیسٹ کی کم از کم فیس 45 ڈالر لی جارہی تھی، اس کے علاوہ کورونا کے مریضوں کے علاج کے لیے بھی بھاری رقم وصول کی جارہی تھی۔

ترجمان نے مزید بتایا کہ حکومت سے معاہدے کے تحت اسپتال کو کورونا کا ٹیسٹ اور مریضوں کا علاج مفت کرنا تھا۔

رپورٹس کے مطابق اسکینڈل سامنے آنے کے بعد بنگلادیش کے ڈی جی ہیلتھ نے اسپتال کے تمام آپریشنز معطل کرنے کے احکامات دے دیے جب کہ اسپتال کے مالک اور مینیجنگ ڈائریکٹر سمیت 9 افراد کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔

دوسری جانب اینٹی کرپشن نے بھی جعل سازی کا اسکینڈل سامنے آنے پر اسپتال کے خلاف تحقیقات کا اعلان کردیا اور مرکزی بینک نے اسپتال کے مالک کے تمام اکاؤنٹس منجمد کردیے ہیں۔

واضح رہے کہ بنگلا دیش میں کورونا کے کیسز کی تعداد ایک لاکھ 78 ہزار سے زائد ہے اور 2200 سے زائد افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.