حکومت کی متنازع سرحدوں پر تعینات فوج کے لئے 35ارب سے زائد ہتھیار خریدنے کی منظوری,بھارت

بھارتی حکومت نے متنازع سرحدوں پر تعینات اپنے فوجی اہلکاروں کیلئے 35ارب روپے سے زائد کے ہتھیار خریدنے کی منظوری دے دی۔بھارتی وزارت دفاع کے مطابق سرحدی فورسز کیلئے 553 ملین ڈالرز کے ایک لاکھ60ہزار سے زائد ہتھیار خریدے جائیں گے جن میں 72ہزار400رائفلز اور93ہزار895 کاربائنز شامل ہیں۔ بھارتی وزیر دفاع نرملا ستھارامن کے زیر صدارت دفاعی کونسل کی جانب سے ہتھیاروں کی خریداری کی منظوری دی گئی۔بھارتی وزارت دفاع سے جاری اعلامیے میں کہا گیا کہ ان ہتھیاروں کو سرحد پر تعینات افواج کی ضروریات کو فوری طور پر پورا کرنے کے لیے خریدا جا رہا ہے۔واضح رہے کہ نئی دہلی کی جانب سے 2014 میں نریندر مودی کی جانب سے وزاتِ عظمیٰ کا عہدہ سنبھالنے کے بعد سے اب تک کئی بڑے دفاعی منصوبوں اور معاہدوں پر دستخط کیے جا چکے ہیں،اس ضمن میں عسکری ماہرین کا کہنا ہے کہ بھارت خطے میں سب سے بڑا ’دفاعی‘ سامان درآمد کرنے والا ملک ہے ۔دوسری جانب جوہری قوت کے حامل سرحدی ممالک چین اور پاکستان سے نبرد آزما ہونے کے لیے اربوں روہے خرچ کررہا ہے۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.