Daily Taqat

کابل ایئرپورٹ دھماکوں میں ہلاکتیں 100 سے زائد ہوگئیں، 150 زخمی

کابل: کابل ائیرپورٹ کے نزدیک دو خودکش حملوں میں ہونے والی ہلاکتوں کی تعداد 100 سے زائد ہوگئی جب کہ زخمی ہونے والے 150 افراد میں سے بعض کی حالت اب بھی تشویش ناک ہے۔

افغان میڈیا کے مطابق کابل میں ایئرپورٹ کے نزدیک ہونے والے حملوں کی ہلاکتوں میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے اور یہ تعداد 100 سے زائد ہوگئی ہے۔ اضافے کی وجہ تشویش ناک حالت کے شکار زخمیوں کا دوران علاج دم توڑ جانا ہے۔

اطلاعات کے مطابق زخمیوں کی تعداد 150 کے لگ بھگ تھی جس میں سے بعض کی حالت تشویش ناک ہے جس کے سبب اب بھی ہلاکتوں میں مزید اضافے کا خدشہ ہے۔
یہ پڑھیں : کابل میں امریکی فوجیوں کی ہلاکت پر امریکی صدر آبدیدہ، بدلہ لینے کا اعلان

دھماکے میں 13 امریکی فوجی بھی ہلاک ہوئے ہیں جس کے بعد امریکی صدر جوبائیڈن نے اپنے فوجیوں کی ہلاکت پر بدلہ لینے کا اعلان کیا ہے۔ امریکی صدر نے کہا کہ حملہ آوروں کو ہر گز معاف نہیں کریں گے، ہم یہ حملہ کبھی نہیں بھولیں گے، کابل دھماکوں میں ہلاک ہونے والے ہمارے ہیروز ہیں، جنہوں نے حملہ کیا وہ اس کی قیمت چکائیں گے اور ہم انہیں طاقت سے جواب دیں گے۔

حامد کرزئی انٹرنیشنل ایئرپورٹ کے باہر 2 خودکش دھماکوں میں 13 امریکی فوجیوں سمیت 90 افراد ہلاک اور 150 زخمی ہوگئے۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق کابل میں حامد کرزئی انٹرنیشنل ایئرپورٹ 2 خود کش دھماکوں سے گونج اُٹھا۔ ایک دھماکا ایئرپورٹ کے مرکزی دروازے پر ہوا جب کہ دوسرا دھماکا قریبی ہوٹل کے باہر ہوا جہاں برطانوی فوجی اور حکام مقیم تھے۔

خود کش دھماکوں میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد 90 ہوگئی ہے جب کہ 150 سے زائد زخمی ہیں۔ دھماکے میں 13 امریکی فوجی ہلاک اور 15 زخمی ہوئے جب کہ 28 طالبان بھی دھماکے میں جاں بحق ہوگئے۔

مریکی میڈیا نے طالبان کے مقامی رہنما کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ کابل ایئرپورٹ پر ہونے والے خود کش دھماکوں میں ایئرپورٹ کے اطراف سیکیورٹی کے انتظامات سنبھالنے والے 28 جنگجو بھی ہلاک ہوئے جب کہ متعدد زخمی ہیں۔

طالبان رہنما نے ایئرپورٹ پر ناقص سیکیورٹی کی ذمہ داری امریکا پر عائد کرتے ہوئے کہا کہ ایئرپورٹ کی سیکیورٹی امریکی اہلکاروں کے پاس تھی جو لوگوں کی حفاظت کرنے میں ناکام رہے۔

دوسری جانب ترجمان طالبان ذبیح اللہ مجاہد نے برطانوی میڈیا کو دیئے گئے انٹرویو میں دھماکے میں طالبان کی ہلاکتوں کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ کابل ایئرپورٹ کی حفاظت کی ذمہ داری امریکا کی تھی اس لیے وہاں طالبان جنگجو موجود نہیں تھے۔

ترجمان طالبان ذبیح اللہ مجاہد نے کہا ہے کہ کابل ایئرپورٹ پر ہونے والے دھماکے کی تحقیقات کے لیے انکوائری کمیٹی تشکیل دیدی ہے جو نہ صرف اس واقعے کی تحقیقات کرے گی بلکہ آئندہ ایسے واقعات کی روک تھام کے لیے لائحہ عمل بھی تیار کرئ گی۔

امریکا نے خبردار کیا ہے کہ داعش افغانستان میں امریکی فوجیوں اور شہریوں پر مزید حملے کرسکتے ہیں اس لیے ایئرپورٹ پر سیکیورٹی میں اضافہ کیا جائے گا تاہم امریکی صدر نے انخلا کا عمل جاری رکھنے کے عزم کا بھی اظہار کیا ہے۔

امریکی صدر جوبائیڈن نے اپنے خطاب میں کابل ایئرپورٹ پر خودکش حملوں کی شدید الفاظ میں مذمت کی۔ دھماکوں میں امریکی فوجیوں کی ہلاکتوں کا تذکرہ کرتے ہوئے صدر جوبائیڈن آبدیدہ ہوگئے۔

امریکی صدر نے ہلاک ہونے والے امریکی فوجیوں کو ہیرو قرار دیتے ہوئے حملوں کے ذمہ داروں سے بدلے لینے کا اعلان کیا۔ انھوں نے متنبہ کیا کہ حملے کے منصوبہ سازوں کو اس کی قیمت چکانا پڑے گی۔ صدر جوبائیڈن نے انخلا کا مشن جاری رکھنے کا اعلان بھی کیا۔

پہلا دھماکا کابل ایئرپورٹ کے مرکزی دروازے پر اس جگہ کیا گیا جہاں لوگوں کی بڑی تعداد اندر داخل ہونے کے لیے موجود تھی اور امریکی فوجی اہلکار سیکیورٹی پر مامور تھے جب کہ دوسرا دھماکا قریبی ہوٹل کے باہر ہوا جہاں برطانوی فوجی اور حکام افغان شہریوں کی برطانیہ منتقلی کے انتظامات کر رہے تھے۔

دھماکوں کے بعد فائرنگ کی آواز بھی سنائی دی۔ کئی افراد ایئرپورٹ کے قریب سے گزرنے والے نالے میں گر گئے۔ ہر طرف افراتفری مچ گئی۔ بھگدڑ میں درجنوں لوگ کچلے گئے۔ جگہ جگہ لاشیں پڑی ہیں۔ اتنی بڑی تعداد میں ہلاک اور زخمی ہونے والوں کی اسپتال منتقلی میں کافی مشکلات کا سامنا رہا۔

اس سے قبل امریکا اور برطانیہ سمیت مغربی ممالک نے دہشت گردی کے پیش نظراپنے شہریوں کو کابل ایئرپورٹ سے دوررہنے کی سخت ہدایت جاری کی تھی۔

واضح رہے کہ 15 اگست کو طالبان کے کابل فتح کرنے کے بعد سے افغانستان سے امریکی اور نیٹو افواج کے لیے کام کرنے والے افغان شہریوں کی اہل خانہ کے ہمراہ ملک چھوڑنے کا عمل جاری ہے اور انخلا کا یہ عمل کابل ایئرپورٹ سے کیا جا رہا ہے جہاں روزانہ ہزاروں شہریوں کا مجمع ہوجاتا ہے۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »