اہم خبرِیں
مریخ پر پانی سے بھرے سمندرکبھی نہیں تھے، سائنسدان گلوکار بلال سعید نے مسجد میں گانے کی ریکارڈنگ پر معافی مانگ لی ایران پر اسلحے کی پابندی میں توسیع کی جائے، عرب ممالک بل گیٹس نے پاکستان کی کورونا کے خلاف کامیابی کو تسلیم کر لیا کورونا سے نمٹنے میں پاکستان دنیا کے لیے مثال ہے، اقوام متحدہ مسجد وزیرخان میں گانے کی عکس بندی، منیجر اوقاف معطل چمن، بم دھماکہ 5 افراد جاں بحق، متعدد زخمی حب ڈیم، پانی کی سطح میں ریکارڈ اضافہ لاک ڈاؤن کے بعد کراچی میں تفریحی مقامات کھل گئے سپریم کورٹ کا کراچی سے تمام بل بورڈز فوری ہٹانے کا حکم پاکستان کو اٹھارویں ترمیم دی اس لیے مقدمات بن رہے ہیں، ، زردار... وفاق کے اوپر کوئی وزارت نہیں بن سکتی، اسلام آباد ہائی کورٹ پاکستان پوسٹ آن لائن سسٹم سے منسلک اختیارات کا ناجائز استعمال، چیئرمین لاہور ویسٹ مینجمنٹ کمپنی ر... موسمیاتی تبدیلیوں کی وجہ سے گندم کی پیداوارکم ہوئی، وزیراعظم اسٹاک مارکیٹ، کاروباری حجم 4 سال کی بلندترین پرپہنچ گیا سائنسی انقلاب، مرے ہوئے شخص سے "حقیقی ملاقات" ممکن آمنہ شیخ نے دوسری شادی کرلی؟ آئی سی سی کی نئی ٹیسٹ رینکنگ جاری افغانستان لویہ جرگہ، 400 طالبان کی رہائی کی منظوری

نیوزی لینڈ میں آتش فشاں پھٹنے سے جاں بحق افراد کی لاشیں نکالنے کیلئے منصوبہ بندی شروع

نیوزی لینڈ پولیس نے کہا ہے کہ پیر کے روز ایک جزیرے وائٹ آئی لینڈ میں پھٹنے والے آتش فشاں سے کم از کم آٹھ افراد جاں بحق ہوئے ہیں۔ جزیرے سے لاشیں نکالنے کا عمل جمعہ کو شروع کیا جائے گا۔

پولیس کے مطابق جزیرے پر ایک اور آتش فشاں پھٹنے کے خطرے کے باوجود ریسکیو مشن آگے بڑھایا جائے گا۔

ذرائع کے مطابق آٹھ افراد کی ہلاکت کی تصدیق پہلے ہی ہو چکی تھی جبکہ 20 افراد تشویشناک حالت میں زیرعلاج ہیں۔

Image result for new zealand volcano pics death

جمعرات کو نیوزی لینڈ کے جیولوجیکل معلومات سے متعلق سائٹ جیونٹ کی جانب سے بتایا گیا کہ اگلے 24 گھنٹوں کے دوران ایک اور آتش فشاں پھٹنے کے 50 سے 60 فیصد امکانات موجود ہیں۔

سائٹ کے اعدادوشمار کے مطابق پچھلے چند دنوں سے ایک اور آتش فشاں پھٹنے کے خطرے میں مستقل اضافہ دیکھا گیا ہے۔

پولیس نے بتایا ہے کہ متاثرہ افراد کے اہل خانہ لاشوں کی بازیابی کے لیے بےتاب ہیں لہذا جلد از جلد آپریشن شروع کرنے پر غور کیا جا رہا ہے۔

اس سے قبل جمعرات کو ایک نیوز کانفرنس میں ڈپٹی پولیس کمشنر کا کہنا تھا کہ پولیس اس خطرناک آپریشن کو انجام دینے کے لیے متعدد طریقوں پر غور کر رہی ہے۔

 

 

 

اس کے ساتھ ساتھ یہ خدشات بھی موجود ہیں کہ جزیرے کی ہوا میں سانس لینا خطرناک ثابت ہو سکتا

ہے۔

حکام کی جانب سے جزیرے پر بھیجے گئے ڈرون کی مدد سے زہریلی گیس کی موجودگی کا پتا لگانے کی کوششیں جاری ہیں۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.