اہم خبرِیں
مریخ پر پانی سے بھرے سمندرکبھی نہیں تھے، سائنسدان گلوکار بلال سعید نے مسجد میں گانے کی ریکارڈنگ پر معافی مانگ لی ایران پر اسلحے کی پابندی میں توسیع کی جائے، عرب ممالک بل گیٹس نے پاکستان کی کورونا کے خلاف کامیابی کو تسلیم کر لیا کورونا سے نمٹنے میں پاکستان دنیا کے لیے مثال ہے، اقوام متحدہ مسجد وزیرخان میں گانے کی عکس بندی، منیجر اوقاف معطل چمن، بم دھماکہ 5 افراد جاں بحق، متعدد زخمی حب ڈیم، پانی کی سطح میں ریکارڈ اضافہ لاک ڈاؤن کے بعد کراچی میں تفریحی مقامات کھل گئے سپریم کورٹ کا کراچی سے تمام بل بورڈز فوری ہٹانے کا حکم پاکستان کو اٹھارویں ترمیم دی اس لیے مقدمات بن رہے ہیں، ، زردار... وفاق کے اوپر کوئی وزارت نہیں بن سکتی، اسلام آباد ہائی کورٹ پاکستان پوسٹ آن لائن سسٹم سے منسلک اختیارات کا ناجائز استعمال، چیئرمین لاہور ویسٹ مینجمنٹ کمپنی ر... موسمیاتی تبدیلیوں کی وجہ سے گندم کی پیداوارکم ہوئی، وزیراعظم اسٹاک مارکیٹ، کاروباری حجم 4 سال کی بلندترین پرپہنچ گیا سائنسی انقلاب، مرے ہوئے شخص سے "حقیقی ملاقات" ممکن آمنہ شیخ نے دوسری شادی کرلی؟ آئی سی سی کی نئی ٹیسٹ رینکنگ جاری افغانستان لویہ جرگہ، 400 طالبان کی رہائی کی منظوری

ملائشیا کے قریب 24 روہنگیا پناہ گزیں سمندرمیں ڈوب گئے

کالمپور: ملائیشیا حکام کےمطابق تھائی لینڈ کے قریب ملائیشیا کے ایک تفریحی جزیرے کے قریب 24 روہنگیا پناہ گزیں سمندر میں ڈوب گئے۔

ملائیشیا کے غوطہ زن 24 روہنگیا مسلمانوں کو تلاش کر رہے ہیں، جو اطاعات کے مطابق ایک کشتی میں سوار ہو کر پناہ حاصل کرنے کے لیے ملائیشیا آ رہے تھے، اچانک سمندر میں کود گئے اور تیر کر تفریحی جزیرے لینگ کاوی پہنچنے کی کوشش میں لاپتا ہو گئے ہیں۔
قیاس ہے کہ وہ سمندر میں ڈوب گئے ہیں۔

ملائیشیا کے کوسٹ گاردز کا کہنا ہے کہ اتوار کو 25 کے قریب افراد تیر کر جزیرے کے ساحل تک پہنچنے کی کوشش کر رہے تھے، مگر ان میں صرف ایک شخص زندہ سلامت جزیرے تک پہنچ سکا ہے۔ زندہ بچ جانے والے نور حسین نے بتایا کہ وہ 25 افراد میں سے واحد شخص ہے جو جزیرے تک پہنچنے میں کامیاب ہوا ہے۔ پولیس اس سے مزید تفتیش کر رہی ہے۔

ان دنوں روہنگیا مسلمان میانمر سے اپنے گھربار چھوڑ کر جان بچانے کے لیے دوسرے ملکوں کا رخ کر رہے ہیں۔ اس سے قبل زیادہ تر روہنگیا بنگلہ دیش جا رہے تھے جہاں ان کی تعداد دس لاکھ کے لگ بھگ بتائی جاتی ہے۔ روہنگیاؤں پناہ گزینوں کا یہ گروپ ملائیشیا پہنچنا چاہ رہا تھا کہ سمندر میں لاپتا ہو گیا۔

میانمار میں فوج کئی برسوں سے ان کے خلاف کارروائیاں کر رہی ہے۔ انسانی حقوق کے اداروں کا الزام ہے کہ فوجی روہنگیا مسلمانوں کی نسل کشی کر رہے ہیں۔ ان کی بستیوں کو نذر آتش کیا جا رہا ہے اور ان کی خواتین جنسی زیادتیوں کا نشانہ بن رہی ہیں۔ میانمر نہ صرف ان الزامات سے انکار کرتا ہے بلکہ تحقیق کے لیے عالمی اداروں کو اپنے ملک میں داخلے کی اجازت بھی نہیں دیتا۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.