اہم خبرِیں
مریخ پر پانی سے بھرے سمندرکبھی نہیں تھے، سائنسدان گلوکار بلال سعید نے مسجد میں گانے کی ریکارڈنگ پر معافی مانگ لی ایران پر اسلحے کی پابندی میں توسیع کی جائے، عرب ممالک بل گیٹس نے پاکستان کی کورونا کے خلاف کامیابی کو تسلیم کر لیا کورونا سے نمٹنے میں پاکستان دنیا کے لیے مثال ہے، اقوام متحدہ مسجد وزیرخان میں گانے کی عکس بندی، منیجر اوقاف معطل چمن، بم دھماکہ 5 افراد جاں بحق، متعدد زخمی حب ڈیم، پانی کی سطح میں ریکارڈ اضافہ لاک ڈاؤن کے بعد کراچی میں تفریحی مقامات کھل گئے سپریم کورٹ کا کراچی سے تمام بل بورڈز فوری ہٹانے کا حکم پاکستان کو اٹھارویں ترمیم دی اس لیے مقدمات بن رہے ہیں، ، زردار... وفاق کے اوپر کوئی وزارت نہیں بن سکتی، اسلام آباد ہائی کورٹ پاکستان پوسٹ آن لائن سسٹم سے منسلک اختیارات کا ناجائز استعمال، چیئرمین لاہور ویسٹ مینجمنٹ کمپنی ر... موسمیاتی تبدیلیوں کی وجہ سے گندم کی پیداوارکم ہوئی، وزیراعظم اسٹاک مارکیٹ، کاروباری حجم 4 سال کی بلندترین پرپہنچ گیا سائنسی انقلاب، مرے ہوئے شخص سے "حقیقی ملاقات" ممکن آمنہ شیخ نے دوسری شادی کرلی؟ آئی سی سی کی نئی ٹیسٹ رینکنگ جاری افغانستان لویہ جرگہ، 400 طالبان کی رہائی کی منظوری

بھارت میں شہریت سے متعلق بل کی منظوری پر عمران خان کی بھرپور تنقید

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے بھارت میں شہریت سے متعلق متنازع ترمیمی بل کی منظوری کو مودی حکومت کا ہندو بالادستی کا منظم ایجنڈہ قرار دے دیا ہے۔

بھارت میں متعصبانہ بل کی منظوری پر وزیراعظم عمران خان نے مودی سرکاری کو آڑے ہاتھوں لیا اور سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر شیئر کیے گئے پیغام میں لکھا کہ مودی حکومت میں بھارت منظم طریقے سے ہندو بالادستی کے ایجنڈے کی طرف بڑھ رہا ہے۔

عمران خان نے تحریر کیا کہ ہندو بالادستی کے ایجنڈے کی طرف نیا قدم شہریت کا متنازع بل ہے جب کہ ہندو بالادستی پر مبنی ایجنڈے کا آغاز کشمیر کے غیرقانونی قبضے اور محاصرے سے ہوا۔

وزیراعظم عمران خان نے بھارت میں اقلیتوں کے ساتھ روا رکھے جانے والے سلوک کے متعلق تحریر کیا کہ بھارت میں جتھوں کی شکل میں مسلمانوں اور دیگر اقلیتوں کو نشانہ بنایا جاتا ہے۔

 

انہوں نے کہا کہ نریندر مودی کی پاکستان کو مسلسل دھمکیاں ایٹمی جنگ کا باعث بن سکتی ہیں جس کے اثرات پوری دنیا پر مرتب ہوں گے۔

یاد رہے کہ بھارتی لوک سبھا سے منظور کیے جانے والے متنازع بل کے تحت پاکستان، بنگلہ دیش اور افغانستان سے بھارت جانے والے غیر مسلموں کو شہریت دی جائے گی مگر مسلمانوں کو یہ سہولت حاصل نہیں ہو گی۔

انڈین یونین مسلم لیگ نے متنازع ترمیمی بل بھارتی سپریم کورٹ میں چیلنج کر دیا ہے۔

بل کی منظوری کے خلاف بھارت کے اندر سے ہی آوازیں اٹھ رہی ہیں، آسام، منی پور، تریپورہ سمیت بھارت کی شمال مشرقی ریاستوں میں بل کے خلاف بھرپور احتجاج ریکارڈ کرایا گیا ہے۔

 


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.