اہم خبرِیں
مریخ پر پانی سے بھرے سمندرکبھی نہیں تھے، سائنسدان گلوکار بلال سعید نے مسجد میں گانے کی ریکارڈنگ پر معافی مانگ لی ایران پر اسلحے کی پابندی میں توسیع کی جائے، عرب ممالک بل گیٹس نے پاکستان کی کورونا کے خلاف کامیابی کو تسلیم کر لیا کورونا سے نمٹنے میں پاکستان دنیا کے لیے مثال ہے، اقوام متحدہ مسجد وزیرخان میں گانے کی عکس بندی، منیجر اوقاف معطل چمن، بم دھماکہ 5 افراد جاں بحق، متعدد زخمی حب ڈیم، پانی کی سطح میں ریکارڈ اضافہ لاک ڈاؤن کے بعد کراچی میں تفریحی مقامات کھل گئے سپریم کورٹ کا کراچی سے تمام بل بورڈز فوری ہٹانے کا حکم پاکستان کو اٹھارویں ترمیم دی اس لیے مقدمات بن رہے ہیں، ، زردار... وفاق کے اوپر کوئی وزارت نہیں بن سکتی، اسلام آباد ہائی کورٹ پاکستان پوسٹ آن لائن سسٹم سے منسلک اختیارات کا ناجائز استعمال، چیئرمین لاہور ویسٹ مینجمنٹ کمپنی ر... موسمیاتی تبدیلیوں کی وجہ سے گندم کی پیداوارکم ہوئی، وزیراعظم اسٹاک مارکیٹ، کاروباری حجم 4 سال کی بلندترین پرپہنچ گیا سائنسی انقلاب، مرے ہوئے شخص سے "حقیقی ملاقات" ممکن آمنہ شیخ نے دوسری شادی کرلی؟ آئی سی سی کی نئی ٹیسٹ رینکنگ جاری افغانستان لویہ جرگہ، 400 طالبان کی رہائی کی منظوری

ایشیائی خطے کی نئی صف بندی شروع

اسلام آباد: پاکستان ،چین افغانستان اور نیپال کے وزرا خارجہ نے گزشتہ روز ویڈیو کانفرنس میں شرکت کی جس میں کورونا وبا سے نمٹنے اور معیشتوں کی بحالی کیلیے باہمی تعاون بڑھانے پر اتفاق کیا گیا۔

اس اجلاس کو خطے کے ممالک کے درمیان ہونے والی نئی صف بندی کے طور پر دیکھا جا رہا ہے،چین کے وزیر خارجہ وانگ ژی نے وڈیو کانفرنس کی میزبانی کی،وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی مصروفیات کی وجہ سے ان کا ریکارڈ شدہ بیان ویڈیو کانفرنس میں سنایا گیا،وفاقی وزیر اقتصادی امور خسرو بختیار نے اس کانفرنس میں پاکستان کی نمائندگی کی۔

شاہ محمود قریشی نے اپنے بیان میں کورونا وبا کی صورتحال پر ویڈیو کانفرنس کے انعقاد پر چینی وزیر خارجہ کا شکریہ ادا کیا،انہوں نے کہا کہ اس کانفرنس میں شریک چاروں ملکوں کو اس عالمی وبا سے نمٹنے کیلئے مشترکہ حکمت عملی بنانے میں مدد ملے گی۔ یہ کانفرنس اس حوالے سے اہمیت کی حامل ہے کہ چین کچھ ہفتوں سے کورونا وبا کے خلاف خطے میں میں سرکردہ کردار ادا کر رہا ہے۔

تاہم ان علاقائی اقدامات میں بھارت شامل نہیں ،جو خطے میں نئی صف بندی کو ظاہر کرتا ہے،ماہرین کا خیال ہے کہ چین کی اس نئی پیش رفت سے پاکستان کو بنگلہ دیش سمیت خطے کے دیگر ملکوں کے ساتھ تعلقات کو ازسرنو قائم کرنے کا موقع ملا ہے۔ پاکستان اس وقت نیپال کے ساتھ بھی تعلقات کو مزید بہتر کرنا چاہ رہا ہے کیوں کہ نیپال اب بھارت کے اثرورسوخ سے آزاد ہو چکا ہے۔

گزشتہ روز ہونے والی ویڈیو کانفرنس اس امر کی غماز ہے کہ چین اس میں شریک ملکوں کی کورونا سے متاثرہ معیشتوں کی بحالی میں مدد کرنا چاہتا ہے تاکہ اس کے بعد چین خطے کی نئی صف بندی کر سکے،جو ظاہر ہے بھارت اور اس کے مغربی اتحادی کیلئے باعث تشویش ہو گا۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.