اہم خبرِیں
پنجاب میں اسمارٹ لاک ڈاؤن ختم افغانستان، جیل پر حملہ، تین افراد ہلاک، متعدد قیدی فرار بینکوں کے معمول کے اوقات کار بحال آدم علیہ السلام کے بعد کعبہ شریف میں عبادت کرنے والی واحد خاتو... امریکی خلا باز زمین پرواپس پہنچ گئے کورونا کیسزگھٹ کر25 ہزار172 رہ گئے عشرئہ ذو الحجہ اورعیدا لاضحی کے فضائل واحکام پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ قوم کشمیریوں کے ساتھ کھڑی ہے، شاہ محمود قریشی ملک میں کورونا کے فعال مریضوں کی تعداد 25 ہزار رہ گئی افغانستان، صوبہ لوگر میں خودکش حملہ، 17 افراد ہلاک حجاجِ کرام آج رمی جمار اور قربانی میں مصروف مریخ کے پہلے راؤنڈ ٹرپ پرخلائی گاڑی "پرسویرینس" روانہ افغان حکومت کے بعد طالبان کا بھی تمام قیدی رہا کرنے کا اعلان پی ایس ایل بورڈ اور فرنچائزز کے تعلقات کشیدہ بیٹی نے قبر کشائی کر کے والد کی میت نکال لی راجن پور، سی ٹی ڈی کی کارروائی، 5 دہشت گرد ہلاک درگاہ عالیہ گولڑہ شریف پیرشاہ عبدالحق گیلانی انتقال کرگئے پی ٹی اے نے پب جی گیم پر پابندی ختم کردی عیدالاضحٰی کی تعطیلات کے دوران موسم کی صورتحال

امریکی بحری جنگی جہاز میں دھماکا، 21 افراد زخمی

کیلی فورنیا: امریکہ کی ریاست کیلی فورنیا کے شہر سان ڈیاگو کی بندرگاہ پر لنگر انداز امریکی بحریہ کے جنگی جہاز بنہام رچرڈ میں آتش زدگی اور دھماکے سے 21 افراد زخمی ہو گئے۔

کیلی فورنیا کے بیس میں امریکی جنگی بحری جہاز میں زوردار دھماکا ہوا جس کے بعد جہاز میں آگ بھڑک اُٹھی۔ تیزی سے پھیلتی آگ نے جہاز کے ایک حصے کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔ دھماکے کی نوعیت اور وجہ معلوم نہیں ہوسکی ہے۔

دھماکے کی آواز سنتے ہی ریسکیو ادارے متحرک ہوگئے، فائر بریگیڈ کے عملے نے ایک گھنٹے کی جدوجہد کے بعد آگ پر قابو پالیا۔ جہاز سے 21 زخمیوں کو اسپتال منتقل کیا گیا ہے جن میں سے 17 امریکی بحریہ کے اہلکار ہیں،3 اہلکاروں کی حالت نازک بتائی جارہی ہے۔

امریکی بحریہ کے ترجمان نے میڈیا کو بتایا کہ بحری فوجی اڈے پر جہاز کی مرمت کی جارہی تھی کہ اچانک دھماکا ہوگیا، دھماکے میں ہلاکتیں نہیں ہوئیں تاہم 21 اہلکار اور شہری زخمی ہوئے ہیں۔ حادثے کی وجوہات کے تعین کے لیے انکوائری کمیٹی تشکیل دیدی گئی ہے۔

تخریبی کارروائی کا اندیشہ مسترد کرتے ہوئے امریکی بحریہ کے ترجمان مائیک رونی کا کہنا تھا کہ ایسا کوئی ثبوت نہیں ملا جس کی بنیاد پر یہ کہا جا سکے کہ یہ آگ کسی نے جان بوجھ کر لگائی ہے۔ جنگی جہاز میں موجود بارود کو حفاظتی اقدامات کے طور پر جہاز کے معائنے سے پہلے ہی اتار لیا گیا تھا۔

امریکی بحریہ کا واقعے سے متعلق جاری کردہ بیان میں کہنا ہے کہ دھماکے کے وقت جہاز پر موجود عملے کے 17 افراد اور چار عام شہری زخمی ہوئے جن کو طبی امداد کے لیے اسپتال منتقل کیا گیا۔ بحریہ کے حکام نے زخمی ہونے والے تمام افراد کی حالت خطرے سے باہر بتائی ہے۔

دھماکہ اتنا شدید تھا کہ اس کی آواز کافی دور تک سنی گئی جب کہ دھماکے سے لگنے والی آگ کے شعلے دور سے دیکھے جا سکتے تھے۔ جسے بجھانے کے لیے نصف درجن فائر فائٹنگ کشتیاں موقع پر پہنچی تھیں۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.