اہم خبرِیں

افغانستان، صوبہ لوگر میں خودکش حملہ، 17 افراد ہلاک

کابل: افغانستان کے صوبے لوگر میں خودکش حملے کے نتیجے میں 17 افراد ہلاک اور 21 زخمی ہو گئے ہیں۔

خود کش حملہ ایسے موقع پر ہوا ہے جب افغان حکومت اور طالبان نے عیدالاضحیٰ کے موقع پر جنگ بندی کا اعلان کر رکھا تھا جس کا آغاز جمعرات اور جمعے کی درمیانی شب 12 بجے سے ہونا تھا۔ واضح رہے کہ افغانستان میں جمعے کو عیدالاضحیٰ منائی جا رہی ہے۔

لوگر صوبے کے شہر پلِ عالم کے ایک اسپتال میں زخمیوں اور لاشوں کو منتقل کیا گیا ہے۔ اسپتال کے سینئر ڈاکٹر صدیق اللہ کے مطابق اسپتال میں 17 لاشوں اور 21 زخمیوں کو لایا گیا ہے۔ لوگر صوبے کے گورنر کے ترجمان دیدار لاونگ کے مطابق یہ خودکش حملہ تھا جس میں بمبار نے بارود سے بھری گاڑی مجمع میں اُس وقت دھماکے سے اڑا دی جب لوگ عید کی خریداری میں مصروف تھے۔

افغان وزارتِ داخلہ نے دھماکے کی مذمت کی ہے۔ ترجمان وزارتِ داخلہ کا کہنا ہے کہ دہشت گردوں نے ایک مرتبہ پھر عیدالاضحیٰ کی شب حملہ کر کے ہمارے متعدد افراد کی جان لی ہے۔ دوسری جانب طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے حملے سے لاتعلقی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس حملے میں ان کے جنگجوؤں کا کوئی کردار نہیں ہے۔

افغانستان میں حالیہ کچھ عرصے میں اس طرح کے حملوں کی ذمہ داری شدت پسند تنظیم داعش قبول کرتی آئی ہے۔ تاہم لوگر میں ہونے والے خود کش حملے کی اب تک کسی نے ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.