Latest news

سرسوں کے ساگ میں موجود کیلشیم، آئرن اور وٹامن خون بنانے میں مددگار ثابت ہوتے ہیں

طبی ماہرین نے کہاہے کہ سرسوں کے ساگ میں قوت اور صحت کا خزانہ چھپا ہے۔قدرت نے اس میں ذائقے کیساتھ ساتھ شفا بھی رکھی ہے۔ نرم و گداز گندلوں کا تازہ تازہ پکا ہوا ساگ ہو اور مکھن اور مکئی یا باجرے کی روٹی بھی ساتھ ہو تو کھانے کا مزہ دوبالا ہوجاتا ہے۔ ساگ میں جب مکھن ڈال کر کھایا جائے تو اسکا اپنا ہی مزہ ہوتا ہے اور یہ تازہ سبزی ہے ضرور کھانا چاہئے۔سرسوں کے ساگ میں کیلشیم، آئرن اور وٹامن وافر مقدار میں ہوتے ہیں جو خون بنانے کے ساتھ ساتھ بھوک میں بھی اضافہ کرتے ہیں۔ طبی ماہرین کا کہنا ہے ساگ میں کیلشیئم، سوڈیم، کلورین، فاسفورس، فولاد، پروٹین( جسم کو نشونما دینے والے اجزا) اور وٹامن اے، بی اور ای کافی مقدار میں پائے جاتے ہیں۔ ساگ کے بارے میں یہ بات یاد رکھنے کے قابل ہے کہ ساگ اور دودھ بڑی حد تک ایک دوسرے کا بدل ہیں اور ساگ جسم میں بڑی حد تک دودھ کی کمی پورا کرسکتے ہیں۔عام طور پر زمیندار تازہ ساگ پکاتے اور کھاتے ہیں۔ تازہ کھانے کا اپنا ہی مزہ ہے۔ شہری لوگ اسے بہت پسند کرتے ہیں


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.