اہم خبرِیں
زمین کے پاس سے گزرتا ’دُم دار ستارہ‘ پاکستان سے کیسے دیکھا جائ... گوگل بھارت میں دس ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کرے گا بھوک بڑھنے سے 12 ہزار افراد روزانہ ہلاک ہو سکتے ہیں، رپورٹ امریکی شہر کیلی فورنیا میں کورونا نے تباہی مچا دی پاکستان نیوی کے بحری بیڑے میں نئے اور جدید بحری جنگی جہازپی ای... معاشرے میں بگاڑ کے اسباب ”کشمیریوں کی زندگی کی بھی اہمیت ہے“ مجھے دشمن کے بچوں کو پڑھانا ہے پاکستان ترقی کا ہدف حاصل کرنے میں کامیاب، اقوام متحدہ کی رپورٹ... امریکی بحری جنگی جہاز میں دھماکا، 21 افراد زخمی سعودی عرب میں تیل کی تنصیبات پرمیزائلوں سے حملہ دنیا بھر میں آج یومِ شہدائے کشمیر منایا جائے گا پاکستان فرانسیسی شعبہ زراعت اور شعبہ حیوانات کی مہارت سے استفا... میر شکیل الرحمان کی ہمشیرہ کے انتقال پر سی پی این ای کا تعزیت ... شمالی وزیرستان، پاک فوج کا آپریشن، چاردہشت گرد جہنم وصل گھوٹکی ٹرین حادثے کو پندرہ سال بیت گئے پاکستان میں کورونا کے 2 ہزار 521 نئے کیسز،74 اموات انگلستان کی پاکستان میں ڈھائی لاکھ ڈالر کی سرمایہ کاری آیاصوفیہ مسجد کی کہانی ” آپ ایسا کریں کہ آپ کل آ جائیں“

دل کی بیماریوں سے بچنے کیلئے ان باتوں کا خیال رکھیں!

امراض قلب کی عمومی وجوہات موٹاپا، کولیسٹرول کی زیادتی، مرغن غذائوں کا بے حد استعمال، بلند فشارِ خون، ذیابیطس، بسیار خوری، سگریٹ اور منشیات کا استعمال، بے جا فکر مندی اور غیر متحرک طرزِ زندگی ہیں۔ ان تمام وجوہات کم و بیش بچاجاسکتاہے یا ان کا علاج ممکن ہے ۔ چربی/ کولیسٹرول کی زیادتی اور سگریٹ نوشی دل کو خون پہنچانے والی شریانوں کو خطرناک حد تک تنگ کردیتی ہیں، نتیجتاً دل کے پٹھوں کو خون، آکسیجن اور خوراک کی ترسیل کم ہو جاتی ہے۔ فراہم کردہ آکسیجن اور خوراک جب دل کے پٹھوں کی ضروریات پوری کرنے کے لیے ناکافی ہوتی ہے تو دل اور سینے میں شدید درد اور گھٹن کا احساس ہوتا ہے جسے عرف عام میں ’دل کا دورہ ‘ کہتے ہیں۔

اس خطرناک صورتحال سے دوچار ہونے سے پہلے کئی اہم علامات ظاہر ہوتی ہیں جنہیں عموماً مریض اہم نہیںگردانتا اور آخر کار اس خطرناک اور ہلاکت خیز صورت حال سے دوچار ہونے کے بعد ہسپتال کا رخ کرتا ہے۔ جی ہاں یہ ایک حقیقت ہے کہ ہم جس معاشرے میں رہ رہے ہیں، ایمبولینس کے لئے اُس وقت فون کیا جاتا ہے جب سینے میں ہونے والی گھبراہٹ گھر میں موجود تمام درد کی دوائوں اور گھریلو تراکیب اور ٹوٹکوں سے ٹھیک نہ ہو اور شدید درد کی شکل اختیار کرلے۔ اکثر  اس حالت تک پہنچنے کے بعد ناقابل تلافی نقصان ہوچکا ہوتا ہے اور مکمل ازالہ ممکن نہیں ہوتا۔ پھر پچھتاوا ہی مقدر بنتا ہے۔

آگاہ رہئے کہ خواہ مخواہ شدید تھکن، چہرے اور پائوں پر سوجن، چکر آنا، گھبراہٹ محسوس ہونا، کھانے کے بعد سینے میں بھاری پن محسوس ہونا، کھانسی، بار بار شدید سر درد، دل کا تیز دھڑکنا یا بے ترتیب دھڑکن اور بلند فشارِ خون امراض قلب کی خاموش علامات ہو سکتی ہیں جو آخر کار خاموش قاتل ثابت ہوتی ہیں۔ جبکہ دل کے دورہ کی علامات میں بے چینی  اور بلاوجہ کا ڈر محسوس ہونا، بلاوجہ زیادہ پسینہ آنا، دل کی دھڑکن بے ترتیب ہونا، مریض کی رنگت زرد ہونا اور سینے میں بوجھ اور گھبراہٹ محسوس ہونا دل کے دورے کی خاموش علامات ہو سکتی ہیں۔ لہذا ان علامات میں کسی بھی علامت کے ظاہر ہوتے ہی، وقت ضائع کیے بغیر اپنے قریبی  ڈاکٹر سے رجوع کریں۔

اگر آپ کے سامنے کبھی کسی کو دل کا دورہ پڑے تو مریض کو نیم دراز حالت میں لٹا دیں اور تسلی دیں۔ سینے، گردن اور پیٹ کے گرد کپڑے ڈھیلے کر دیں اور وقت ضائع کیے بغیر ایمبولینس سروس سے رابطہ کرکے قریبی ہسپتال منتقل کریں۔

بچوں میں جوڑوں والے بخار کے نتیجے میں دل کو ہونے والے نقصانات پر آج تک بہت کم روشنی ڈالی گئی ہے حالانکہ تھوڑی سی احتیاط سے اس سے مکمل طور پر بچا جا سکتا ہے۔ اس کی ابتدا گلے کے انفیکشن سے ہوتی ہے، اگر بروقت صحیح علاج نہ کیا جائے تو دل کے والوز کو شدید نقصان پہنچتا ہے، اس کے لیے بس اتنا سمجھنا ضروری ہے کہ گلے کے انفیکشن کو معمولی سمجھ کر نظرانداز نہ کریں، یہ جوڑوں والے بخار کی شکل میں دل کو شدید نقصان پہنچاسکتا ہے لہٰذا اگر گلے کے انفیکشن کی علامات بہتر نہ ہوں تو ڈاکٹر سے رجوع کرنا ضروری ہے۔

دل کے امراض سے بچنے کے لیے متوازن، اچھی اور تازہ غذا استعمال کریں، تازہ پھلوں اور سبزیوں کا استعمال بکثرت کریں، نمک کا استعمال کم رکھیں اور بڑی عمر کے لوگ فشار خون چیک کرواتے رہیں، اگر معالج نے ذیابیطس یا فشارِ خون کی دوا تجویز کی ہے تو ضرور استعمال کریں۔ سگریٹ نوشی اور منشیات سے مکمل پرہیز کریں اور متحرک طرز زندگی اپنائیں۔

ایک جدید تحقیق کے مطابق اگر آپ چار گھنٹے مسلسل ایک جگہ ساکن بیٹھے رہے ہیں تو آپ کے دل کو تقریباً اتنا ہی نقصان پہنچا ہے جتنا ایک سگریٹ پینے سے ہونا تھا لہٰذا متحرک رہیں اور ورزش کو اپنا معمول بنائیں، وزن کو کنٹرول رکھیں اور خواہ مخواہ کی ذہنی الجھنوں اور پریشانیوں سے حتی الوسع کنارہ کشی اختیار کریں۔ اپنی عمومی صحت کے مطابق اپنے معالج کو وقفے وقفے سے چیک اپ کراتے رہیں۔آپ کی صحت مند زندگی نہ صرف آپ کے بلکہ آپ کے اعزا و اقربا اور قوم و ملک کے لیے ایک قیمتی سرمایہ ہے اور خالق کائنات کی طرف سے ایک امتحان اور تحفہ ہے، اس سے پیار کیجئے اور ضائع ہونے سے بچایے۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.