سینئر صحافی و تجزیہ کار چوہدری غلام حسین کا تہلکہ خیز دعویٰ

لاہور :  وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کی خصوصی طیارے کے ذریعے سعودی عرب روانگی سے متعلق ہر کوئی اپنے اپنے تئیں اندازے لگانے کی کوششوں میں مصروف ہیں تاہم سینئر صحافی و تجزیہ کار چوہدری غلام حسین نے تہلکہ خیز دعویٰ کر دیا ہے۔

نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے چوہدری غلام حسین نے کہا کہ ”ٹرمپ کے داماد نے شیخ سعید اور مختلف سینیٹرز کو ڈال کر محمد بن سلمان کو سفارش کروائی ہے کہ ان کی سنیں جس پر سعودی عرب کے سفیر نے یہ تجویز دی کہ شہباز شریف کو بلا کر ان سے ملاقات کر لی جائے۔

اس وقت چونکہ نواز شریف نے انہیں وزارت عظمیٰ کا امیدوار نامزد کیا ہے، اگرچہ اس میں کوئی سنجیدگی ہے اور نہ ہی نواز شریف اس میں سنجیدہ ہیں، معذرت کیساتھ یہ کہہ رہا ہوں کیونکہ ان کا ماضی یہی کہتا ہے کہ نواز شریف اس معاملے میں شہباز شریف کو چکر دیں گے۔
سعودی عرب نے تو اب کرپشن کرنے والے شہزادوں کو چکی میں پیسنا شروع کر دیا ہے اور ان لوگوں کو بھی جنہوں نے سعودی عرب میں ان شہزادوں کیساتھ مل کر کرپشن اور لوٹ مار کی ہے۔ شہزادے پکڑے جا چکے ہیں اور اب آگے یہ ہے کہ تفتیش میں کافی جگہ پر انگلیاں اٹھی ہیں، اس میں شریف فیملی بھی ہے اور حریری فیملی بھی ہے جبکہ یورپ اور امریکہ کے کئی لوگ بھی شامل ہیں۔
سعودی عرب نے 10 جنوری 2018ءتک ان لوگوں کی ایک فہرست جاری کرنی ہے جنہوں نے شہزادوں کیساتھ مل کر کرپشن کی اور اس میں شریف فیملی بھی شامل ہے۔ ان تمام لوگوں کی فہرست دینی ہے کہ انہوں نے اتنے بلین ڈالر کی ڈاکہ زنی کی ہے تو وہ راکھے ہیں یا ان سب کو پکڑ کر یہاں بند کریں۔ اب سعودی عرب والے کہتے ہیں کہ اگر شہباز شریف وزیراعظم بن گئے تو ہم راہ و رسم قائم رکھتے ہیں، باقی حقائق تو وہ ہی ہیں۔

امریکی صدر ٹرمپ نے اس ملاقات کیلئے اثرورسوخ استعمال کیا اور سعودی سفارتخانے نے بھی مناسب سمجھا کہ یہ تین مہینوں سے پاپڑ بیل رہے ہیں تو ملاقات کرنے میں کیا حرج ہے۔ سابق وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز شریف اس بات پر بہت نالاں ہیں کہ شہباز شریف نے جہاز پکڑا اور خود چلے گئے کیونکہ پارٹی میں تو ان کا پتہ کاٹ دیا گیا تھا۔ اور پھر اس پر انہوں نے غور و حوض بھی کیا ہے کہ اب اس سارے معاملے میں ان کا کیا بنے گا۔“


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.