نیند میں کمی سےمختلف بیماریوں کا خطرہ

ماہرین کا کہنا ہے کہ بھرپور نیند فلو کے خلاف بہترین ہتھیار ثابت ہوسکتی ہےجبکہ نیند کی کمی سے آپ ذیابیطس اور دل کی بیماریوں کا شکار ہوسکتے ہیں۔

ذرائع  کے مطابق نیند سے متعلق ماہر کرس برینٹنرکا کہناہے کہ نیند ’بیٹری کو چارج‘ کرنے جیسی ہےاور فلو کو روکنے کے لئے بہت ضروری ہے لیکن ہر تیسرا امریکی تجویز کردہ سات گھنٹے کی نیند نہیں لے رہا۔

امریکا میں فلو کا یہ موسم خطرناک صورتحال اختیار کرتا جارہا ہے، رواں سال ملک میں انفلوئنزہ سے متعلق بیماریوں کے باعث 30بچے اور 85بالغ افراد جان سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔

ایک تحقیق سے پتہ چلا ہے کہ نیند کی کمی فلوویکسین کے اثر کو کم کردیتی ہے اور صحت کے دائمی مسائل جیسے ذیابیطس اور دل کی بیماریوں کا سبب بنتی ہے۔

برینٹنر کا کہنا ہے کہ فلو سے بچنے کے لئے ہرکوئی ہاتھ دھونے کے بارے میں بات کرتا ہے لیکن میں نہیں سمجھتا کہ لوگ سات سے آٹھ گھنٹے کی نیند کی اہمیت کو جانتے ہیں۔

نیشنل سلیپ فاؤنڈیشن نے 6سے 13سال کی عمر کے بچوں کے لئے 9سے 11گھنٹے ، نوجوانوں میں 8سے 10گھنٹے جبکہ 18سال سے زائد عمر افراد کے لئے 7سے 9گھنٹے کی نیند تجویز کی ہے۔

اُن کا کہنا ہے کہ انفلوئنزہ (ایچ 3این 2) سے بچاؤ کے لئے اِن رہنما اصولوں پرعمل کرنا بہت ضروری ہے کیونکہ اس کے خلاف فلو کی ویکسین صرف 34فیصد ہی موثر ہے۔

2012ء میں شائع ہونے ایک تحقیق کے مطابق نیند میں کمی کےمدافعتی نظام پر اثرات بالکل ایسے ہی پڑتے ہیں جیسے تناؤ کے ہوتے ہیںجو نظام کو کمزور کرکے لوگوں کو بیمار کرسکتی ہے۔

دوسرے الفاظ میں مدافعتی نظام دیر تک کام کرنے کی وجہ سے نیند میں کمی کا جواب دیتا ہے۔

ماہرین کے مطابق اگرکافی نیند نہ لینے کی وجہ سے آپ کا مدافعتی نظام پہلے ہی سخت محنت کررہا ہو تو اُس کے لئے فلو سے بچاؤ مزید مشکل ہوجاتا ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ زیادہ سے زیادہ لوگ تجویز کردہ سات سے آٹھ گھنٹے کی نیند لیں تو معاشرے کو عمومی طور پرصحت بنایا جاسکتا ہے۔

 


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.