اب دیوار کے پار دیکھنا ممکن ہو گا

جدید ٹیکنالوجی کے ماہرین نے انکشاف کیا ہے کہ آئندہ سالوں میں اسمارٹ فون اتنے طاقتور ہو جائیں گے کہ ان سے نکلنے والی لیزر شعاعوں کے ذریعے دیواروں کے آر پار دیکھنا بھی ممکن ہوجائے گا۔گلاسگو یونیورسٹی میں کوانٹم ٹیکنالوجیز کے ماہر ڈینیئل فیشیو اور ہیرئٹ واٹ یونیورسٹی کے

اسٹیفن مک لفلِن نے کہا ہے کہ کیمرا ٹیکنالوجی میں انقلاب اور لیزر شعاعوں کی مدد سے بہت جلد دیواروں کے عقب میں دیکھنا ممکن ہوجائے گا۔انہوں نے مزید بتایا کہ وقت کے ساتھ ساتھ اندھیرے میں دیکھنے کی صلاحیت رکھنے والے کیمرے بھی عام ہو جائیں گے۔ماہرین کا مزید کہنا ہے کہ چہرہ پہچاننے اور سلوموشن ویڈیو بنانے والے کیمرے تو صرف شروعات ہیں، کمپیوٹر پروگرام اور الگورتھم سے کیمرے کی صلاحیت حیرت انگیز طور پر بڑھ چکی ہے۔ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ بہت جلد کیمرے انسانی جسم میں جھانکنے، دیوار کے آرپار دیکھنے اور دھویں میں دیکھنے کے قابل ہوسکیں گے۔ماہرین نے مزید کہا کہ اگر ان کیمروں کو اسمارٹ فون میں لگادیا جائے تو ان سے باقاعدہ جاسوسی کا کام لینا آسان ہوجائے گا۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ اگر یہ ٹیکنالوجی چھوٹی ہوکر موبائل فون میں سماجائے تو لیزر پوائنٹر کو استعمال کرتے ہوئے دیواروں کی اوٹ میں موجود کسی شے کی تصویر لینا آسان ہوجائے گا۔ماہرین نے اس ٹیکنالوجی کے عام ہونے کے ساتھ اس کے سبب ممکنہ پیدا ہونے والے تنازعات کا خدشہ بھی ظاہر کیا ہے۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.