علاقے میں دہشتگرد راہ داری کے قیام کی اجازت نہیں دی جائیگی، ترک صدر

استنبول: ترکی کے صدر رجب طیّب اردوان نے کہا ہے کہ ترکی شمالی شام میں دہشت گردوں کے اڈوں کو قلیل عرصے کے اندر نیست و نابود کر دے گا، علاقے میں شدت پسندوں کو راہداری کے قیام کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ ترک ذرائع ابلاغ کے مطابق استنبول میں اپنی پارٹی کے پارلیمانی گروپ سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے امریکہ کی جانب سے شمالی شام میں علیحدگی پسند تنظیم ”پی کے کے“ کی شاخ ”پی وائے ڈی“ کے ہمراہ دہشت گرد فورس قائم کیے جانے کی کارروائیوں پر ردعمل کا مظاہرہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم اس علاقے میں دہشت گرد راہ داری قائم کیے جانے کی اجازت نہیں دیں گے۔ صدر اردوان نے کہا کہ ہم نے گذشتہ دنوں عراق میں چلی جانے و الی چال کو ناکام بنا دیاہے، شام میں اسی قسم کی چال پر فرات ڈھال آپریشن کے ذریعے کاری ضرب لگائی ہے۔ انھوں نے کہا کہ بہت جلد آفرین اور منبچ سے شروع ہوتے ہوئے شام میں موجود دہشت گردوں کے دیگر ٹھکانوں کو بھی تباہ کر دیں گے۔ صدر اردوان نے کہا کہ اے نیٹو تم اپنے اتحادیوں میں سے کسی ایک کی سرحدوں کی خلاف ورزی کرنے کے خلاف کارروائی کرنے پر مجبور ہو، تم نے اب تک اس حوالے سے کونسا قدم اٹھایا ہے۔ انہوں نے پارلیمانی گروپ کے اجلاس کے بعد صحافیوں کو اعلانات کرتے ہوئے کہا کہ شمالی شام میں ڈیرے جمانے والی دہشت گرد تنظیم کے خلاف فوجی کارروائی شامی مخالف گروہوں کے ساتھ مل کر کی جائے گی۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.