سپریم کورٹ نے رحمان ملک کوتوہین عدالت کا نوٹس جاری کردیا

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے پیپلزپارٹی کے رہنما رحمان ملک کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کردیا۔منگل کو  سپریم کورٹ میں دائر متفرق درخواستوں کی سماعت کے دوران سماعت کے دوران درخواست گزار محمود اختر نے بتایا کہ عبدالرحمن ملک کو 2012 سے 2015 تک لی گئی مراعات واپس دینے کا حکم دیا گیا تھا، تاہم عدالتی حکم پر عمل نہیں ہوا اور وہ ڈیفالٹر ہیں۔ درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ رحمان ملک کو دہری شہریت کیس میں تنخواہیں اور مراعات واپس کرنا تھی جو انہوں نے واپس نہیں کیں۔اس موقع پر عدالت نے ریمارکس دیئے کہ سابق وزیر داخلہ کے خلاف سنگین نوعیت کی عدالتی آبزرویشن موجود ہے جبکہ انہوں نے بطور سینیٹر مانیٹر فنڈز واپس نہیں کیے اور ان فنڈز کی واپسی کے لیے الیکشن کمیشن اور سینیٹ نے کوئی کارروائی بھی نہیں کی، بعد ازاں عدالت نے عبدالرحمن ملک کو نوٹس جاری کردیا۔ عدالت نے انہیں 15 دن میں مراعات واپس کرنے کا حکم دیا تھا۔

 


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.