Latest news

دھرنا طویل اور تحریک انصا ف کی طرح 126دنوں کا نہیں ہو گا : فضل الرحمان

اسلام آباد :  جمعیت علماءاسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ دھرنا طویل اور تحریک انصا ف کی طرح 126دنوں کا نہیں ہو گا، اسلام آباد پہنچ کر خود دھرنے سے متعلق اعلان کروں گا، اگر مارچ کا راستہ روکنے کی کوشش کی گئی تو پورے ملک تک احتجاج پھیلا دیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق جمعیت علماءاسلام(ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے آزادی مارچ میں شرکت کےلئے سکھر سے قافلے کی قیادت کرتے ہوئے آنے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ جمعیت علماءاسلام کی جانب سے اسلام آباد میں صرف آزادی مارچ کرنے کا امکان ہے اور طویل دھرنے نہ دینے کا بھی فیصلہ کیا ہے،جمعیت علماءاسلام کے پارٹی قائدین کے مطابق سربراہ مولانا فضل الرحمان کے خیبرپختونخوا اور پنجاب میں قافلے کی قیادت کرنے سے ان کی گرفتاری کا امکان ہے جبکہ سندھ میں پیپلز پارٹی کی حکومت ہونے کی وجہ سے انہیں گرفتار نہ کرنے کی توقع ہے جبکہ سندھ حکومت مولانا فضل الرحمان کو کارکنان اور سہولیات فراہم کرنے کا عندیہ دیا ہے اور ان صورتوں میں پورے ملک میں مارچ کے حوالے سے فضاءسازگار ہو چکی ہو گئی اور اسلام آباد داخلے اور پنجاب اور کے پی کے قافلے بھی اسلام آباد میں ہوں گے جبکہ سب سے پہلے کے پی کے قافلے کی اسلام آباد پہنچے کی امید کی جا رہی ہے جوپہنچا کر تمام تر انتظامات اور مولانا کے استقبال کی بھی ذمہ داریاں نبھائیں گے۔

جمعیت علماءاسلام کے پارٹی قائدین کی جانب سے اسلام آباد طویل دھرنا نہ دینے پر بھی اتفاق کیا گیا ہے جبکہ فضل الرحمان بھی اس حق میں ہیں، لیکن آزادی مارچ کی کامیابی کے کارکنان کی محنت اور تعداد زیادہ ہونے پر فکر مند بھی ہیں۔

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ وہ 126دن تک دھرنے دینے کے حق میں نہیں ہیں لیکن اسلام آباد پہنچ کر ہی مستقبل کے فیصلے سے سب کو آگاہ کریں گے، پارٹی قائدین سے مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ اگر مارچ کا راستہ روکنے کی کوشش کی گئی تو احتجاج کو پورے ملک میں پھیلا دیا جائے گا۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.