آئندہ مالی سال کا بجٹ ٹیکنوکریٹک ہوگا, مفتاح اسماعیل

اسلام آباد: وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے اقتصادی امور مفتاح اسماعیل نے عندیہ دیا ہے کہ حکومت اگلے مالی سال کا بجٹ 27 اپریل کو پیش کرے گی جو ’ٹیکنوکریٹک‘ نوعیت پر مبنی ہوگا۔نجی ٹی وی کے مطابق انہوںنے کہا کہ مالی سال کا بجٹ سیاسی بجٹ سے ہٹ کر ہوگا۔مفتاح اسمٰعیل نے بتایا کہ حکومت نے تمام سیاسی جماعتوں کو مشاورت میں شامل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔انہوں نے واضح کیا کہ آئندہ مالی سال کا بجٹ ٹیکنوکریکٹ طرز کا ہوگا ¾مسلم لیگ (ن) نے عوامی نوعیت کا بجٹ پلان کیا ہے تاکہ ووٹرز کی حمایت حاصل کی جا سکےجیساکہ ماضی کی حکومتیں کرتی رہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہم سیاسی بجٹ پیش نہیں کریں گے تاکہ اگلی وفاقی حکومت ایک سال تک بغیر کسی رکاوٹ کے اپنا کام کرتی رہے۔مفتاح اسمٰعیل نے بتایا کہ اس ضمن میں حکومت نے پیپلز پارٹی کے رہنما سید نوید قمر اور شیریں رحمان سے مشاورتی نشست کر چکے ہیں جس پر ان کی رضا مندی ہے۔انہوںنے کہاکہ رواں مالی بجٹ کا خسارہ 5 فیصد سے محدود رکھنے کے ساتھ مزید 4.5 فیصد تک کمی لانے کی کوشش کی جائےگی۔انہوں نے بتایا کہ قومی اسمبلی کے اسپیکر ایاز صادق نے پیپلز پارٹی رہنماوں سے ملاقات کرائی۔مفتاح اسمٰعیل نے کہا کہ اسپیکر قومی اسمبلی دیگر سیاسی جماعتوں کے رہنماو¿ں کو بھی مشاورت کے لیے مدعو کریں گے ۔اس حوالے سے انہوں نے واضح کیا مزید مشاورت سے پہلے وہ بجٹ اسٹریٹیجک پیپر (بی ایس پی) کو وفاقی کابینہ سے تصدیق کرائیں گے اور اگلے مالی سال کے بجٹ میں چھٹے سال کا بجٹ بھی شامل ہوگا تاکہ اگلی حکومت امور کی انجام دہدی میں مصروف رہے۔انہوں نے کہا کہ سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ ہوگا لیکن ہائی گروتھ ریٹ کی بنیاد پر ہی تنخواہ میں معقول اضافہ ممکن ہو سکے گا تاہم رواں برس جی ڈی پی کا 6 فیصد گروتھ حاصل کیا جائے گا۔ایک سوال کے جواب میں مفتاح اسماعیل کا کہنا تھا کہ اگلے مالی سال کے بجٹ میں کوئی نیا ٹیکس متعارف نہیں کرایا جائےگا۔مفتاح اسمٰعیل نے بتایا کہ حکومت اگلے سال کے بجٹ میں کوئی نیا ٹیکس متعارف نہیں کرےگی اور 10 فصید مہنگائی میں اضافہ، گروتھ ریٹ میں بہتری اور ٹیکس نیٹ میں 4 لاکھ نئے ٹیکس پئیرز کو شامل کرنے کی بنیاد پر اضافی 12 ارب روپے حاصل ہوں گے۔انہوںنے کہاکہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی خواہش پر حکومت ٹیکس ریٹ میں کمی اور 10 لاکھ روپے کمانے والے شخص پر انکم ٹیکس کی چھوٹ دی گی کیونکہ 4 لاکھ روپے پر سالانہ ٹیکس غریب آدمی پر ظلم ہے ¾انہوں نے واضح کیا کہ دیگر ٹیکس میں کمی کی خبروں کو غیر مصدقہ قرار دیا۔مفتاح اسماعیل نے کہا کہ وفاقی بجٹ 27 اپریل کو پیش کیا جائے گا اور صوبائی حکومتیں آٹھ دنوں کے اندر اپنے بجٹ کا اعلان کر سکتی ہیں کیونکہ موجودہ اسمبلی کی مدت 31 مئی تک ہے اور تمام بجٹ موجودہ اسمبلی سے پاس ہوں گے۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.