Daily Taqat

مسئلہ کشمیرکاحل کشمیریوں کی حق خودارادیت کےمطابق حل ہوگا

اسلام آباد:  معروف غیر سرکاری کشمیری تنظیم کشمیر انسٹیٹیوٹ آف انٹرنیشنل ریلیشنز KIIRکے قیام کی سلور جوبلی کے موقع پر تنظیم کے زیر اہتمام دو روزہ انٹرنیشنل کانفرنس اسلام آباد کلب میں شروع ہوگئی۔” پاتھ ویز ٹوپیس” کے عنوان سے منعقدہ کانفرنس کی صدارت صدر آزادجموں وکشمیر سردار مسعود خان نے کی ۔افتتاحی سیشن سے مہمان خصوصی راجہ ظفر الحق،کشمیر انسٹیٹیوٹ آف انٹرنیشنل ریلیشنز کے چیئرمین اور آزاد جموں وکشمیر قانون ساز اسمبلی کے سپیکر شاہ غلام قادر کے آئی آئی آر کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر سردار امجد یوسف،ڈائریکٹر پروگرام الطاف حسین وانی،آزادکشمیر قانون ساز اسمبلی کے ممبر عبدالرشید ترابی، کل جماعتی حریت کانفرنس آزاد کشمیر کے کنونیئر فیض نقشبندی اور دیگر نے شرکت کی۔اس موقع پر قائد ایوان سینٹ راجہ محمد ظفر الحق نے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کی تمام سیاسی جماعتیں مسئلہ کشمیر کے حل پر متفق ہیں اب وقت آگیا ہے کہ پاکستان، آزاد جموں وکشمیر اور مقبوضہ کشمیر کی قیادت اکٹھے بیٹھ کر مسئلہ کشمیر کے حل کا موجودہ صورتحال کے مطابق جائزہ لے کر لائحہ عمل اختیار کریں۔ مسئلہ کشمیر کا حل اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق کشمیریوں کی حق خودارادیت کے مطابق حل ہوگااور اس پر ملک کی تمام سیاسی جماعتیں متفق ہیں،مسئلہ کشمیر میں کشمیری پہلی پارٹی ہیں ،مسئلہ کشمیر انڈیا اور پاکستان کا باہمی مسئلہ نہیں ہے بلکہ سہہ ملکی مسئلہ ہے اور مسئلے کا حل کشمیریوں نے اپنی امنگوں کے مطابق کرنا ہے ،نوجوان نسل نے جس طرح جدوجہد آزادی کو جاری رکھا ہوا ہے اس کی مثال دنیا میں کہیں نہیں ملتی اور کشمیر انسٹیٹیوٹ انٹرنیشنل ریلیشنز نے بھی ہر اہم فورم پر مسئلہ کشمیر کو جس طرح اجاگرکیا ہے وہ خراج تحسین کے قابل ہے ۔کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے آزاد کشمیر کے صدر سردار مسعود خان نے کہا کہ بھارتی افواج مقبوضہ کشمیر اور لداخ میں دہشتگردی کو فروغ دے رہے ہیں ،کشمیری بھارتی افواج کے ہاتھوں دہشتگردی کا شکار ہورہے ہیں،پاکستان کی ہمیشہ کوشش رہی ہے کہ مسئلہ کشمیر کو ڈائیلا گ کے ذریعہ تینوں پارٹیاں حل کریں مگر انڈیا نے قتل وغارت اور زبردستی کی پالیسی اختیار کی ہوئی ہے۔مقبوضہ کشمیر میں بڑھتے ہوئے بھارتی مظالم کو روکنے کیلئے اقوام متحدہ کی سیکورٹی کونسل اور جنرل اسمبلی مثبت کرداراداکریں۔اس موقع پردیگرمقررین نے اظہارخیال کرتے ہوئے جنوبی ایشیا میں مستقل اور پائیدار امن کیلئے مسئلہ کشمیر کشمیری عوام کی خواہشات کے مطابق پر امن طریقے سے جلد حل کرنے کی ضرورت پر زور دیا،مقررین نے واضع کیا کہ مسئلہ کشمیر پاکستان اور بھارت کے درمیان دو طرفہ تنازع نہیں ہے بلکہ اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے تحت یہ جموں وکشمیر کے عوام کے حق خودارادیت کا سہ فریقی مسئلہ ہے،جس کے تحت جموں وکشمیر کے عوام کو اقوام متحدہ کے قراردادوں کی روشنی میں رائے شماری کے ذریعے اپنے مستقبل کا فیصلہ کرنے کا حق حاصل ہے ۔مقررین نے کہا کہ جموں وکشمیر کے عوام مسئلہ کشمیر کے بنیادی فریق ہیں اور ان کی شمولیت کے ذریعے ہی مسئلہ کشمیرکا پائیدار اور پر امن حل ممکن ہو سکتا ہے۔مقررین نے کشمیریوں کی شمولیت کے ساتھ پاکستان اور بھارت کے درمیان مسئلہ کشمیر کے جلد حل کیلئے فوری طور پر جلد سہ فریقی جامعہ مذاکرات شروع کرنے کی ضرورت پر زورد یا۔دوروزہ کانفرنس میں آزاد کشمیر سے سرکردہ سیاسی و سماجی رہنمائ،مختلف شعبہ ہائے زندگی سے ماہرین،طلبا و طالبات،اساتذہ،ریٹائرڈ بیورو کریٹس،سینئر صحافی،مقبوضہ کشمیر سے سینئر صحافی ،تجزیہ کار ،برطانیہ سے پیس ایکٹویشن ریٹائرڈ سفارتکار اور دیگر ماہرین حصہ لے رہے ہیں۔KIIRکے چیئرمین اور سپیکر شاہ غلام قادر اور ایگزیکٹو ڈائریکٹر سردار امجد یوسف نے تنظیم کا گزشتہ 25سال سے مسئلہ کشمیر کے پر امن حل کیلئے سرگرمیوں پر روشنی ڈالی۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »