Daily Taqat

حکومت سرکاری گندم کےآٹےکی فراہمی کےساتھ فلورملوں کواپنا آٹا بھی فراہم کرنےکی اجازت دے‘ فلورملزایسوسی ایشن

لاہور: پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن نے حکومت کے اعلان کردہ رمضان پیکج پر اپنے تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت سرکاری گندم کے آٹے کی فراہمی کے ساتھ فلور ملوں کو اپنا آٹا بھی فراہم کرنے کی اجازت دے ،فلور ملوں کا ساڑھے تین ارب روپے کا ربیٹ فوری طور پر ادا کیا جائے ،پورے سال کے لئے گندم کی ایکسپورٹ پالیسی بنائے اور اس میں کوئی تبدیلی نہ کی جائے ۔ اس امر کا  اظہار پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن کے چیئرمین چوہدری عنصر جاوید نے گروپ لیڈر عاصم رضا احمد اورپنجاب کے چیئرمین لیاقت علی خان خاکوانی سمیت دیگر عہدیداروں کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ انہوںنے کہا کہ حکومت کی جانب سے رمضان پیکج کے تحت سبسڈی کی مد میں گیارہ ارب روپے مختص کئے گئے ہیں۔ فلور ملز ایسوسی ایشن نے ہمیشہ رمضان پیکج کی حمایت کی ہے لیکن اس مرتبہ فلور ملوں کو پابند کیا جارہا ہے کہ وہ صرف حکومت کی فراہم کردہ گندم کا آٹا مارکیٹ میں سپلائی کریں ۔ہمار امطالبہ ہے کہ آٹے پر ٹارگٹڈ سبسڈی دینی چاہیے اور فلور ملوں کو اپنا تیار کردہ آٹا بھی مارکیٹ میں فراہم کرنے دیا جائے ۔ انہوںنے کہا کہ پنجاب کے پاس اس وقت چالیس لاکھ ٹن گندم کا ذخیرہ موجود ہے جبکہ رواں سیزن کے تحت بھی خریداری کا عمل جاری ہے ۔ اس صورتحال میں صرف سبسڈی والا آٹا فراہم کرنا مناسب نہیں ۔ انہوںنے مطالبہ کیا کہ فلور ملز کے ساڑھے تین ارب کے روکے گئے ربیٹ بھی ادا کئے جائیں ۔ انہوں نے یہ بھی مطالبہ کیا کہ گندم اور اس کی مصنوعات کی زمینی راستے سے ایکسپورٹ پر ربیٹ 159ڈالر فی ٹن مقرر کی جائے جو اس وقت120ڈالر فی ٹن ہے ۔حکومت کی جانب سے سمندر ی راستے سے گندم اور اس کی مصنوعات کی ایکسپورٹ کرنے پر 159ڈالر فی ٹن ربیٹ دی جارہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی حالیہ ایکسپورٹ پالیسی سے تاحال 70ہزار ٹن گندم کی مصنوعات ایکسپورٹ ہو سکیں جو زمینی حقائق کی بھرپور عکاسی کرتی ہیں ۔ ہم حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ حکومت گندم کی ایکسپورٹ پالیسی پورے سال کےلئے بنائے اور اس میں کوئی تبدیلی نہ کی جائے ۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »