Daily Taqat

انسانی سمگلنگ کی روک تھام کےلئے سزائیں بڑھانے کا بل متفقہ طور پر منظور

اسلام آبا د :  قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برا ئے اوور سیز پاکستانیز نے انسانی اسمگلنگ کی روک تھا م کےلئے غیر قانونی پروموٹرز کیخلاف سزائیں بڑھانے کا بل متفقہ طور پر منظور کر لیا۔کمیٹی نے وزارت اوورسیز کو انٹرنیشنل لیبر آرگنائزیشن ( آئی ایل او ) کے ذریعے سانحہ بلدیہ فیکٹری کے متاثرین کو امدادی رقم کی ادائیگی کے معاملے کو حل کر نے کی ہدایت کر دی ، کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہو ئے ڈائریکٹر جنرل بیورو آف امیگریشن ایند اوور سیز ایمپلائمنٹ کاشف احمد نور نے بتایا کہ گزشتہ تین سالوں میں اوور سیز ایمپلائمنٹ پروموٹرز کے 36لائسنس منسوخ کئے گئے جبکہ سوا کروڑ کے جرمانے کئے گئے ،ہماری کو شش ہو تی ہے کہ بچوں کو قانونی راستہ فراہم کیا جائے ۔منگل کو قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے اوور سیز پاکستانیز کا اجلاس چیئرمین عامر علی خان مگسی کی صدارت میں ہو ا ، جس میں او پی ایف کی ہاﺅسنگ اسکیم کو بجلی کی فراہمی کے حوالے سے بریفنگ دیتے ہوئے آئیسکو حکام نے بتایا کہ اسکیم کے بلاک سی میں بجلی کا کام 90فیصد مکمل ہو چکا ہے ، جس پر اب تک 80لاکھ کے قریب خرچہ ہو چکا ہے ،لیکن بجلی کو منسلک کر نے کے لئے جاپان روڈ پر کچھ مسائل کا سامنا ہے ، جبکہ ریلوے نے بھی لائن کے لئے اجازت نہیں دی ، جس پر کمیٹی ارکان نے کہا کہ ریلوے کو کیا مسئلہ ہے چیئرمین کمیٹی نے کہا کہ ہم اس بارے میں ریلوے کو خظ لکھتے ہیں اور وزیر ریلوے سعد رفیق سے بھی بات کر تے ہیں ، وزارت حکام نے کہا کہ جاپان روڈ پبلک لوگوں کی زمین پر بنا ہوا ہے وہ اجازت نہیں دے رہے ، رکن کمیٹی عالیہ کامران نے کہا کہ سب کچھ کمیٹی نے ہی کر نا ہے تو او پی ایف والے کیا کر رہے ہیں ،ہاﺅسنگ سکیم کا بلاک سی ہینڈ اوور کرنا تھا جس پر وزارت حکام نے کہا کہ بلاک سی ہینڈ اوور کر دیا گیا ہے ، اس موقع پر اجلاس میں امیگریشن کے ترمیمی بل 2017پر بھی غور کیا گیا ، بل کی محرک شازیہ ثوبیہ نے کہا کہ میر ا بل کو ئی اسپیشل نہیں صرف ترمیم کر نی ہے ، غیر قانونی طور پر انسانی اسمگلنگ ہو رہی ہے ، لیبیا میں جو کشتی الٹی ہے وہ بھی انسانی سمگلنگ ہے ، کوئٹہ میں بھی ایسا ہی ایک واقعہ ہو ا تھا ، ہم اس کو کنٹرول کر سکتے ہیں ، دو دفعہ یہ بل پاس ہو اہے لیکن اسمبلی میں پیش نہیں ہو ا، جس پر سیکرٹری وزارت اوور سیز پاکستانیز نے کہا کہ وزارت نے کہا تھا کہ ہم آفیشل بل لے کر آئیں گے ، ہمارآفیشل بل بھی اس بل کے ساتھ جڑا ہے ہماری اس کے اندر چار ترامیم ہیں ، شازیہ ثوبیہ نے کم سے کم ایک سال کی سزا رکھی جبکہ ہم نے کم سے کم ایک سال کی سزا کو ختم کر دیا ہے ،کیونکہ اگر کسی کا قصور بڑا نہیں تو اسے بھی ایک سال کی سزا ہو گی ، باقی سزائیں وہی ہیں جو شازیہ ثوبیہ نے رکھی ہیں ، ہمارا بل لاءمیں جائے گا پھر اسمبلی میں جائے گا، اس میں اپ ٹو 5سال کی سزا ہو گی ، اس موقع پر ارکان کمیٹی نے کہا کہ بل شازیہ ثوبیہ کے نام پر ہی ہونا چاہیئے وزارت کی ترامیم اس بل میں شامل کر کے بل کو پاس کیا جائے ، جس کے بعد کمیٹی نے متفقہ طور پر بل کو پاس کر دیا ، اس موقع پر ڈائریکٹر جنرل بیورو آف امیگریشن ایند اوور سیز ایمپلائمنٹ کاشف احمد نور نے کمیٹی کا بتایا کہ گزشتہ تین سالوں میں اوور سیز ایمپلائمنٹ پروموٹرز کے 36لائسنس منسوخ کئے گئے جبکہ سوا کروڑ کے جرمانے کئے گئے ،ہماری کو شش ہو تی ہے کہ بچوں کو قانونی راستہ فراہم کیا جائے ، سیکرٹری اوور سیز نے کہا کہ اوور سیز ایمپلائمنٹ کارپوریشن پروموٹر کے طور پر بھی کام کر تا ہے اس وقت کوریا کے ساتھ کنٹریکٹ ہے ، کوریا کے ساتھ ایم او یو سائن کیا ہے جو دو سال تک چلے گا ، کوریا والے سال میں ایک اشتہار دینے کی اجازت دیتے ہیں ، سعودی عرب اور کویت جو میڈیکل ڈاکٹر جاتے ہیں وہ او ای سی کے تحت جاتے ہیں ، اس موقع پر وزارت حکام کی جانب سے انٹرنیشنل لیبر آرگنائزیشن ( آئی ایل او )کے حوالے سے بھی بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ آئی ایل او کا ہیڈ آفس جنیوا میں ہے پاکستان 1947سے اس رکن ہے ، رکن کمیٹی شگفتہ جمانی نے کہا کہ بلدیہ فیکٹری میں جو حادثہ ہو ا تھا کیا اس کے حوالے سے آئی ایل او نے کچھ کیا ؟وزارت حکام نے کہا 2012میں یہ واقعہ ہو ا اس وقت وفاقی اور صوبائی حکومتوں نے متاثرین کی امداد کی تھی ،متاثرین کے لئے 5.1ملین یورو کی رقم آئی ایل او کو ٹرنسفر ہو چکے ہیں لیکن متاثرہ خاندان پے منٹ کے فارمولے پر رضامند نہیں ہیں ، جس پر چیئرمین کمیٹی نے وزارت کو آئی ایل او کے ساتھ مل کر معاملے کو حل کر نے کی ہدایت کر دی ،


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »