Daily Taqat

معاشرے قانون کی حکمرانی سے کامیابی حاصل کرتے ہیں، جسٹس آف پاکستان

اسلام آباد:  چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے کہا ہے کہ معاشرے قانون کی حکمرانی سے کامیابی حاصل کرتے ہیں، آئین کی کمانڈ یہی ہے کہ ملک منتخب نمائندوں کے ذریعے ہی چلایا جائے گا۔اسلام آباد میں چیف جسٹس نے آٹھویں جوڈیشل کانفرنس کے اختتامی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم مقننہ کا احترام کرتے ہیں، کبھی بھی اپنے حلف کی خلاف ورزی نہیں کریں گے۔اس موقع پر چیف جسٹس نے جوڈیشل کانفرنس کی سفارشات پرعمل درآمد کمیٹی بنانے کا بھی اعلان کیا۔ اپنے خطاب میں چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ تنازعات کے متبادل حل کا طریقہ کار پاکستان میں کوئی نیا تصور نہیں۔انہوں نے کہا کہ تنازعات کے متبادل حل کے طریقے کی جڑ گاو¿ں میں پنچایت نظام سے ہے، بابا رحمتے کے فیصلے کو اس کی ساکھ پر اعتماد کے باعث سب مانتے ہیں۔چیف جسٹس نے کہا کہ ہم بہت خوش نصیب  ہیں کہ ہمارے پاس آئین ہے، قانون کی حکمرانی سے معاشرے کامیابیاں حاصل کرتے ہیں،آئین کا ابتدائیہ کہتا ہے کہ ملک منتخب نمائندوں کے ذریعے چلایا جائے گا اور یہی آئین کی کمانڈ ہے۔جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ ہم مقننہ کا احترام کرتے ہیں، عدلیہ نے آئین کے تحفظ اور دفاع کا حلف لے رکھا ہے، ہم کبھی اپنے آئینی حلف کی خلاف ورزی نہیں کریں گے، ہم عوام کے بنیادی حقوق کے محافظ ہیں۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »