نوجوان ملک کی باگ ڈورسنبھالنے کیلئے خود کوتیارکریں, صدرممنون حسین

اسلام آباد : صدر مملکت ممنون حسین نے کہا ہے کہ نوجوان ملک کی باگ ڈورسنبھالنے کے لئے خود کو تیار کریں، پاکستان کا مستقبل جمہوریت سے وابستہ ہے ¾ ہمیں اپنے معاشرے میں جمہوری رویوں کو فروغ دینا چاہیے ۔وہ بدھ کو ایوان صدر میں بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناح کی علمی
درسگاہ سندھ مدرسة الاسلام یونیورسٹی کے طالبِ علموں سے بات چیت کررہے تھے جنہوں نے جامعہ کے وائس چانسلر ڈاکٹر محمد علی شیخ کی سربراہی میں ان سے ملاقات کی۔ صدر مملکت نے کہا کہ قومی ترقی کا حصول صرف اسی صورت میں ممکن ہے جب ہم اخلاص کے ساتھ ہر لحظہ علم و تحقیق کی جستجو میں رہیں۔ انہوں نے کہا کہ جدید دنیا اور نئے سماجی، سیاسی اور معاشی رجحانات کو سمجھنے کے لئے زیادہ سے زیادہ مطالعہ کریں اور اس طرح کی سرگرمیوں سے جو علم بھی آپ حاصل کریں اسے اپنی عملی زندگی کا حصہ بنائیں۔ صدر مملکت نے طلباءسے کہا کہ تعلیم کے ساتھ ساتھ کردار سازی پر بھی بھرپور توجہ دیں تاکہ معاشرے میں اخلاص کا عنصر پروان چڑھ سکے۔ انہوں نے بچیوں پر زور دیا کہ اپنے آپ کو علم کے زیور سے ضرور آراستہ کریں اور اس سلسلہ میں جو شعبہ بھی اختیار کرنا چاہیں کریں لیکن اپنی اقدار و روایات کو ہمیشہ مقدم رکھیں۔ صدر مملکت نے مسرت کا اظہار کیا کہ سندھ مدرسة الاسلام ایک جامعہ کی حیثیت سے علمی سرگرمیوں میں بھرپور حصہ لے رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاک چین اقتصادی راہداری کی صورت میں نئے امکانات جنم لے رہے ہیں۔ ان سے بھرپور فائدہ اٹھانے کے لیے طلباءاپنے آپ کو ابھی سے تیار کریں۔ انہوں نے کہا کہ سی پیک کے تحت بہت سے توانائی منصوبہ جات مکمل ہو چکے ہیں اور باقی منصوبوں پر تیزی سے کام جاری ہے۔ صدر مملکت نے کہا کہ سی پیک کے روٹ کے حوالے سے بعض لوگ ابہام پھیلا رہے ہیں جو سراسر غلط ہے، سی پیک کے روٹ میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ اس منصوبے کی اہمیت کو سمجھتے ہوئے بہت سے ممالک نے اس کے ساتھ منسلک ہونے کی خواہش کا اظہار کیا ہے جو اس بات کا مظہر ہے کہ آئندہ اس سے پاکستان کو کتنا فائدہ ہو سکتا ہے۔ صدر مملکت نے کہا کہ پاکستان کا مستقبل جمہوریت سے وابستہ ہے اس لیے ضروری ہے کہ ہم اپنے معاشرے میں جمہوری روّیوں کو فروغ دیں۔ صدر مملکت نے طالب علموں کی صلاحیتوں میں اضافے کے لئے سندھ مدرسة الاسلام یونیورسٹی کے نیشنل لیڈر شپ پروگرام کی تعریف کی اور اسے مزید مو¿ثر بنانے کی ہدایت کی۔ انہوں نے توقع ظاہر کی کہ اس پروگرام کے تحت طلباءکواندرون و بیرون ملک دیگر تعلیمی و سرکاری اداروں کے دورے کرنے کا موقع ملے گا جس سے وہ بہت کچھ سیکھ سکیں گے۔ صدر مملکت نے امید کا اظہار کیاکہ سندھ مدرسة الاسلام بحیثیت جامعہ اپنے معیار میں مزید بہتری لائی گی تاکہ طلباءکو معاصر دنیا اور عملی زندگی کے تقاضوں کو بہتر طور پر سمجھنے کا موقع مل سکے۔ اس موقع پر وائس چانسلر ڈاکٹر محمد علی شیخ نے صدر مملکت کو اپنے ادارے کی کارکردگی کے بارے میں آگاہ کیا۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.