بھارت کی یوم جمہوریہ کے موقع پراسلام آباد میں احتجاج

اسلام آباد: بھارت کی یوم جمہوریہ کے موقع پر جمعہ کو اسلام آباد میں حریت کانفرنس کے زیر اہتمام احتجاجی ریلی کانکالی گئی، جس میں چیئرمین پیس اینڈ کلچر انسٹی ٹیوٹ مشال
ملک ،حریت رہنما عبدالحمید لون،مجید مہر سمیت بچوں کو سول سوسائٹی کے لوگوں نے شرکت کی، شرکاءنے پلے کارڈز اور بینرز اٹھا رکھے تھے جن پرکشمیر میں ہندوستان کے مظالم کیخلاف اورکشمیر کی آزادی کے میںنعرے درج تھے،مظاہرین نے آزادی کے حق اورمودی کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔احتجاجی شرکاءسے خطاب کرتے ہوئے حریت رہنما مشال ملک کا کہنا تھا کہہ نام نہاد جمہوریت کا راگ الاپنے والا ہندوستان لاشوں اور خون پر کھڑے ہو کر یوم جمہوریہ منارہی ہے،مقبوضہ کشمیر میں دن بہ دن بھارتی مظالم میں اضافہ ہو رہا ہے۔ م زینب کے واقعہ پر پورا کشمیر سڑکوں پر نکل آئے جو کہ ہندوستان کو برداشت نہ ہوا اورکشمیر میں معصوم آسیہ جیسے بچیوں کو درندگی کا نشانہ بناناشروع کیا ہے، انسانیت کے لئے آواز اٹھانا بھی ہندوستان کو گوارا نہیں، آج پورا کشمیر متحد ہیں اور ہندوستان ایک طرف یوم جمہوریہ منا رہی ہے تو پوری دنیا میں مقیم کشمیری بھارت کی نام نہاد جمہوریت کا پردہ فاش کرنے کیلئے سڑکوں پر سراپا احتجاج ہیں۔انہوں نے کہا کہہ ہندوستان کے اندربھی آزادی کی تحریکیں جنم لے رہی ہیں، مودی کی نام نہاد جمہوری حکومت نے مظالم کی ساری حدیں پار کردی ہیں، ان کا مزید کہنا تھا کہہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پ عالمی برادری کی خاموشی معنی خیز ہے، آج مقبوضہ کشمیر میں لوگوںکو اپنے پیاروں اورشہیدوں پر جانے سے بھی روکا جا رہا ہے،ہندوستان نفرت کاجو بیج بو رہا ہے غیور کشمیری اس کا جواب ضرور دیں گے، مقبوضہ وادی میں کرفیو نافذ ہے،حریت رہنما پابند سلاسل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان کا بڑی قوت بننے کا خواب، خواب ہی رہے گا۔احتجاجی ریلی سے حریت رہنما عبدالحمید لون، مجید مہر ویگر نے بھی خطاب کیا۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.