Daily Taqat

لوٹ کھسوٹ کی سیاست ملک کے مفاد میں نہیں, وزیراعظم شاہد خاقان عباسی

میانوالی: وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ لوٹ کھسوٹ کی سیاست ملک کے مفاد میں نہیں ، ضمیر خرید کر سینٹ میں آنے والوں کو شرمندہ کریں گے ،خیبر پختون خوا حکومت نے بجلی پیدا کرنے کےلئے 100ملین کیوبک فٹ گیس تو لے لی کوئی منصوبہ نہیں
لگایا،چار سال میں ایک یونٹ بجلی پیدا نہیں کی،ہم نے سازشوں کا مقابلہ بھی کیا اور ساتھ کام بھی کرتے رہے ،عوام فیصلہ کر لیں انھیں کام والوں کو ووٹ دینا ہے گالیاں دینے والوں کو ،پنجاب نے انھیں وسائل سے ترقی کی ہے جو دوسرے صوبوں کو بھی مل رہے ہیں،شہباز شریف کا کوئی ثانی نہیں ،آج پورا ملک پنجاب پر رشک کرتا ہے۔میانوالی کی تحصیل عیسیٰ خیل میں30کروڑ روپے کی لاگت سے بننے والے گیس فراہمی کے منصوبے کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ 2013 میں برسراقتدار آنے والی مسلم لیگ(ن) کی حکومت نے ان پانچ سال میں اتنے ترقیاتی کام کرائے جتنے 2013 سے پہلے 65 سال میں نہیں ہوئے تھے۔انھوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کی ہر وقت کوشش ہے کہ وہ عوام کو بہتر سے بہتر سہولیات فراہم کرے۔ان کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ(ن) کی حکومت جب آئی تھی تو گیس کے مسائل تھے اور سی این جی اسٹیشنز پر لمبی قطاریں تھیں لیکن اب ایسی کوئی پریشانی نہیں۔انھوں نے کہا کہ ن لیگ نے ان ہی وسائل میں پنجاب کے مسائل کا خاتمہ کیا ہے جو چاروں صوبوں کو دیئے گئے ہیں۔وزیراعظم نے کہا کہ حکومت نے دھرنوں، مشکل حالات کے باوجود کام کرائے اور سیاسی سازشوں کا مقابلہ کیا، خیبرپختون خوا سمیت چاروں صوبوں کی حکومتوں کی کارکردگی کا جائزہ لیا جائے تو وزیراعلی پنجاب شہباز شریف کے کاموں کا کوئی مقابلہ نہیں کرسکتا، باقی صوبوں کے عوام پنجاب کو رشک کی نگاہ سے دیکھتے ہیں اور شہباز شریف جیسا وزیراعلی چاہتے ہیں۔انھوں نے کہا کہ عوام فیصلہ کریں کہ انہیں کام کرنے والوں کو ووٹ دینا ہے یا گالیاں دینے والوں کو۔ شاہد خاقان عباسی نے خیبرپختونخوا حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ‘انہوں نے کہا تھا کہ بجلی کا پلانٹ لگانا ہے گیس دی جائے جس کی مثال ماضی میں نہیں تھی پھر بھی ہم نے 100 ملین فٹ گیس دی، اس کے بعد 4 سال کا عرصہ گزر گیا لیکن وہاں کوئی بجلی کا منصوبہ نہیں لگا’۔وزیراعظم نے کہا کہ سینیٹ کے انتخابات ہونے جا رہے ہیں، جو لوگ ووٹ خرید کر سینیٹ میں آئیں گے ان سے مقابلہ ذاتی طور پر کریں گے ۔ان کا مزید کہنا تھا جس شخص کا ایک ایم پی اے سینیٹ میں نہیں ہے وہ شخص کیسے سینیٹر بن سکتا ہے یہ سیاست ملک کے مفاد میں نہیں ہے ہم ایسے لوگوں کا مقابلہ کریں گے۔لوٹ کھسوٹ، ضمیر فروشی اور ووٹ خریدنے کی سیاست ملک کے مفاد میں نہیں، ایسی سیاست کے خلاف جہاد کرکے اسے ختم کرنا ہوگا۔وزیراعظم کا کہنا ضمیر خرید کر ایوان میں آنے والا عوامی نمائندہ نہیں ہو سکتا، ووٹ خرید کر سینیٹ میں آنے والوں کو شرمندہ کریں گے ۔ انہوں نے کہا حکومت سازشوں کا مقابلہ بھی کرتی رہی اور کام بھی کیے، مشکل حالات کے باوجود حکومت نے ترقی کے سفر کو جاری رکھا۔وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ چترال سے گوادر تک منصوبے لگ رہے ہیں، گیس، بجلی، اسپتال، صنعتیں لگ رہی ہیں۔ انہوں نے کہا تمام منصوبے نواز شریف اور نون لیگ کا تحفہ ہے۔ انہوں نے کہا آج منفی سیاست کا مقابلہ پاکستان کے عوام نے کرنا ہے، مسلم لیگ ن نے خدمت اور شرافت کی سیاست کی ہے، خیبرپختونخوا کا صوبہ اور پنجاب کو دیکھ لیں کہاں ترقی ہوئی اور کہاں نہیں، ماضی کی اور ہماری حکومت میں یہ فرق ہے۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »