Daily Taqat

سپریم کورٹ کا دیامربھاشا ڈیم اراضی کی حدبندی کیلئے فریقین کو نوٹس

اسلام آباد :  سپریم کورٹ آف پاکستان نے دیامر بھاشا ڈیم کی اراضی کی حدبندی کے لیے فریقین کو نوٹسز جاری کردئیے۔ پیر کو چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں دیامربھاشا ڈیم کی خیبرپختونخوا اور گلگت بلتستان میں حد بندی کے معاملے پر سماعت ہوئی۔دوران سماعت ایڈووکیٹ جنرل گلگت بلتستان نے بتایا کہ گلگت بلتستان پاکستانی کی آئینی حدود میں نہیں جس کی وجہ سے ڈیم کی رائلٹی کا مسئلہ بن رہا ہے۔اس پر چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ اس مسئلے کا فیصلہ کون کرے گا؟ جس پر ایڈووکیٹ جنرل گلگت بلتستان نے کہا کہ ہمیں وقت دے دیں  اس معاملے پر جواب جمع کرا دیں گے۔چیف جسٹس نے کہا کہ گلگت بلتستان کا پاکستان پر حق ہے اور گلگت بلتستان رائلٹی کا معاملہ سپریم کورٹ مین چیلنج کرسکتا ہے۔

اس دوران جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دئیے کہ رپورٹ کے مطابق منصوبے کی ایک ٹربائن خیبرپختونخوا میں آتی ہے۔بعد ازاں عدالت نے ڈیم اراضی کے معاملے پر فریقین کو نوٹسز جاری کرتے ہوئے 15 روز میں جواب طلب کرلیا۔خیال رہے کہ چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے ملک میں پانی کی قلت کا نوٹس لیتے ہوئے ملک میں دیامر بھاشا اور مہمند ڈیم کےلئے فنڈ مہم کا آغاز کیا تھا۔بعد ازاں وزیر اعظم عمران خان نے بھی عوام سے اس ڈیم میں فنڈز دینے کی اپیل کی تھی۔اس اپیل کے بعد ملک بھر کے علاوہ بیرون ملک مقیم پاکستانی ڈیم فنڈز میں بڑھ چڑھ کرحصہ لے رہے ہیں اور اب تک ساڑھے 4 ارب روپے سے زائد رقم جمع ہوچکی ہے۔

 


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »