Daily Taqat

پی ٹی آئی کراچی کی قیادت نے بلدیاتی انتخابات کی تیاریوں کا آغاز کردیا

کراچی :  پاکستان تحریک انصاف کراچی کی قیادت نے بلدیاتی انتخابات کی تیاری شروع کردی ہے۔مختلف رہنما ابھی سے مئیر کراچی کے عہدے کے لئے تگ و دو میں لگ گئے ہیں۔ عمران خان کے قریبی سمجھے جانے والے ساتھیوں نے اپنے قریبی رفقا کو بلدیاتی انتخات
میں حصہ لینے کے حوالے سے گرین سگنل دے دیا ہے ۔عمران اسماعیل،علی زیدی اور فیصل واوڈاسمیت اہم رہنما مئیر کراچی کے لئے اپنی من پسند شخصیت کو آگے لانا چاہتے ہیں ۔جبکہ بلدیاتی انتخابات میں کامیابی کی صورت میں صدر مملکت عارف علوی کے قریبی ساتھیوں کو بھی نظر انداز نہیں کیا جاسکتا ہے۔بلدیاتی انتخابات کے حوالے سے پارٹی کے نظریاتی اور سینئر رہنما اور کارکنان ایک مرتبہ پھر تشویش میں مبتلا ہوگئے ہیں کہ عام انتخابات کی طرح ان انتخابات میں بھی ان کو نظرانداز کردیا جائے گا ۔تفصیلات کی مطابق پاکستان تحریک انصاف کراچی کی سب سے بڑی جماعت ہونے کے باوجود عوامی مسائل کو تاحال حل کرانے میں ناکام رہی ہے تاہم اب اس کی نظریں آئند ہ بلدیاتی انتخابات پر ہیں ۔عام انتخابات کے نتائج کو مدنظر رکھتے ہوئے پارٹی رہنماو¿ں کو امید ہے کہ وہ بلدیاتی انتخابات میں آسانی کے ساتھ کامیابی حاصل کرلیں گے اسی وجہ سے مختلف رہنماو¿ں نے ابھی سے ہی مئیر کراچی کے عہدے کے حصول کے لئے کوششیں شروع کردی ہیں ۔ذرائع کے مطابق ابھی تک یہ طے نہیں پایا گیا ہے کہ بلدیاتی انتخابات کب ہونگے مگرعمران خان کے قرینی سمجھے جانے والے ساتھیوں کی وجہ سے پارٹی کے نظریاتی اور سینئر رہنما تشویش کا شکار ہیں کیونکہ حالیہ ضمنی انتخابات میں پارٹی کے نظر یاتی اور سینئر کارکنوں نے پارٹی قیادت بالخصوص فردوس شمیم نقوی پر الزام عائد کیا تھا کہ انہوں نے پارٹی ٹکٹس کی تقسیم میں اقربا پروری کا مظاہرہ کرتے ہوئے اپنے قریبی دوستوں کو ٹکٹوں سے نوازاتھا۔پارٹی کے نظریاتی رہنما کو خدشہ ہے کہ بلدیاتی انتخابات میں بھی پاکستان تحریک انصاف کی قیادت اپنے پرانے اصولوں کو اپنا تے ہوئے اپنی من پسند شخصیات پارٹی ٹکٹس اورمئیر کراچی کے عہدے کے لیے نامزد کریں گی ۔ذرائع کے پاکستان تحریک انصاف کے ضلعی اور مرکزی قیادت میں شدید اختلافات پائے جاتے ہیں۔جس کی وجہ سے آئے روزپارٹی کے کارکنان ایک دوسرے کو شدید تنقید کا نشانہ بھی بناتے ہیں۔جس کی مثال حالیہ دنوں پی ٹی آئی کے رکن قومی اسمبلی آفتاب جہانگیر اور پی ٹی آئی کے رکن صوبائی اسمبلی رابستان خان کے درمیان تصام بھی ہے جنہوںنے ایک دوسرے پرلینڈ مافیا کو سپورٹ کرنے کا الزام لگایا جس کے بعد نوبت ہاتھا پائی تک پہنچ گئی ۔یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب دونوں سرجانی ٹاو¿ن اور تیسر ٹا ن کے دورے کے بعد واپس جارہے تھے۔پی ٹی آئی ارکان کے آپس میں اختلافات اور عوام سے دوری کے نقصانات بلدیاتی انتخابات میں ہوسکتے ہیں۔عوام اپنے منتخب نمائندوں کی شکل دیکھنے کو ترس گئے ہیں اور ساتھ ہی عوام کی جانب سے اپنے منتخب نمائندوں کو سوشل میڈیا پر شدید تنقید کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔کراچی میںپاکستان تحریک انصاف کے 12ایم این اے اس وقت اپنے حلقوں میں گوہر نایاب بن گئے ہیں کوئی ایک رکن قومی اسمبلی انتخابات میں کامیابی کے بعد اپنے حلقے میں عوامی مسائل کو حل کروانے میں ناکام رہی ہے۔مگر مختلف سیاسی رہنماﺅں نے کراچی میں اپنی گرفت کو اس قدر مظبوط سمجھ لیا ہے کہ وہ مئیر کراچی کے عہدے کے لئے کوششیں شروع کردی ہیں۔عمران اسماعیل،علی زیدی اور فیصل واوڈاسمیت اہم رہنما مئیر کراچی کے لئے اپنے منتخب فرد کو لانا چاہتے ہیں۔جبکہ انتخابات میں کامیابی کی صورت میں صدر مملکت عارف علوی کے قریبی ساتھیوں کو بھی نظر انداز نہیں کیا جاسکتا ہے۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »