لاہورہائی کورٹ نے خواتین کوٹے کونظراندازکرنے پرپی آئی اے میں پائلٹس کی بھرتیوں کا عمل روک دیا

لاہور : لاہور ہائی کورٹ نے خواتین کوٹے کو نظر انداز کر نے پرتاحکم ثانی قومی ایئر لائن پی آئی اے میں پائلٹس کی بھرتیوں کا عمل روک دیا،عدالت نے چیئرمین پی آئی اے کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 27 مارچ کو جواب طلب کر لیا،لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس محمد فرخ عرفان خان نے کیس کی سماعت کی،درخواست گزار کومل ظفرکی جانب سے موقف اختیار کیا گیا کہ پی آئی اے پائلٹس کی بھرتیوں میں خواتین کو پالیسی کے خلاف نظر انداز کیا گیا،انہوں نے بتایا کہ پی آئی اے میں خواتین پائلٹوں کی بھرتیوں کےلئے دس فیصد کوٹہ مختص ہے،انہوں نے بتایا کہ پائلٹس کی بھرتیوں میں خواتین کوٹہ کو مکمل نظر انداز کر دیا گیا جو کہ پی آئی اے پالیسی کی سنگین خلاف ورزی ہے،انہوں نے استدعا کی کہ عدالت پالیسی کے مطابق خواتین کی مخصوص نشستوں پر بھرتیوں کا عمل مکمل کرنے کے احکامات صادر کرے،جس پرعدالت نے خواتین کوٹے کو نظر انداز کر نے پرتاحکم ثانی پائلٹس کی بھرتیوں کا عمل روک دیا،عدالت نے چیئرمین پی آئی اے کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.