قصورواقعہ کاملزم پکڑے جانے پراللہ کاشکرادا کرتے ہیں، خورشید شاہ

اسلام آباد :  قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف خورشید شاہ نے کہا ہے کہ قصور واقعہ کا ملزم پکڑے جانے پر اللہ کا شکر ادا کرتے ہیں، گزشتہ روز پریس کانفرنس میں کھڑے ہو کر تالیاں بجائی گئیں،کیا ایسے واقعے کے بعد تالیاں بجائی جاتی ہیں؟۔ اپوزیشن لیڈر نے قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب میں 1100 اور لاہور میں 107 بچے ایسے واقعات کا شکار ہوئے، اب ان کیلئے کب تالیاں بجائی جائیں گی؟۔ انہوں نے کہا کہ 16-2017 تک جو واقعات ہوئے ان کا کوئی نتیجہ نہیں نکلا، بچوں سے زیادتی کے ملزمان کو سزا نہیں ہوئی، دنیا کے ہر کونے میں ایسے واقعات ہوتے ہیں۔ خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ 2016 میں لاہور 51 اور قصور میں 66 بچوں سے زیادتی ہوئی لیکن نتیجہ کچھ نہیں، سندھ میں واقعہ ہوا تو فوری کارروائی ہوئی بلکہ ملزموں کو بھاگنے نہیں دیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ بچی سے زیادتی ہوئی اور مجرم کو پکڑ کر تالیاں بجائی گئیں، وہ آدمی جو اہم عہدے پر بیٹھ کر ایسا کام کرے تو شرم آتی ہے، جس نے بھی کل ٹی وی دیکھا اس کا سر شرم سے جھک گیا ہوگا۔ اپوزیشن لیڈر نے کہاکہ تالیاں بجوانے کے خلاف مذمتی قرارداد لائی جائے، شہباز شریف کو اپنے الفاظ واپس لینے چاہئیں۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.