اردنی شہریوں کی ہلاکت کا واقعہ اسرائیل نے عمان سے معافی مانگ لی

عمان : اردن نے بتایا ہے کہ اسرائیل نے گزشتہ برس جولائی میں عَمّان میں اپنے سفارت خانے میں اسرائیلی سکیورٹی گارڈ کے ہاتھوں دو اردنی شہریوں کی ہلاکت پر سرکاری طور پر معافی مانگ لی ہے۔ واقعے کے بعد دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات کشیدہ ہونے کے نتیجے میں اسرائیلی سفارت خانہ بند کر دیا گیا تھا۔
اردن کے سرکاری ذرائع نے حکومت کے ترجمان محمد المومنی کے حوالے سے بتایا کہ اسرائیلی وزارت خارجہ نے ایک یادداشت ارسال کی ہے جس میں اپنے شدید افسوس اور ندامت کا اظہار کیا ہے۔ ساتھ یہ بھی واضح کیا گیا ہے کہ اسرائیل اس معاملے کے حوالے سے قانونی اقدامات کرے گا۔اردن کا کہنا تھا کہ وہ اسرائیلی سکیورٹی گارڈ کے خلاف قانونی کارروائی کے آغاز سے قبل اسرائیل کو عمّان میں سفارت خانے کے دوبارہ کھولے جانے کی اجازت نہیں دے گا۔المومنی کے مطابق اسرائیل نے یادداشت میں حادثے میں جاں بحق ہونے والوں کے اہل خانہ کو مالی زرِ تلافی پیش کرنے کا بھی عہد کیا ہے۔یادداشت میں کہا گیا ہے کہ اسرائیلی حکومت اردن کی حکومت کے ساتھ تعاون کا سلسلہ دوبارہ شروع کرنے کی خواہش مند ہے اور ان معاملات کے تصفیے کے لیے کوشاں ہے۔دوسری جانب اسرائیلی وزیراعظم بنیامین نیتنیاہو کے دفتر نے بتایا کہ اردن میں اسرائیلی سفارت خانہ فوری طور پر مکمل صورت میں اپنا کام شروع کر دے گا۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.