عمران خان کا احتجاج میں زرداری کےساتھ کنٹینرپربیٹھنے سے انکار

لاہور: اپوزیشن کی حکومت مخالف تحریک کے حوالے سے 17جنوری کو پنجاب اسمبلی کے سامنے مال روڑ پر ہونے والے احتجاج اور جلسے کے انتظامات شرو ع کر)
دیئے گئے ہیں ۔ تاہم تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے جلسے سے ایک روز قبل پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری کے ساتھ ایک اسٹیج پر بیٹھنے سے انکار کردیا ہے ، جس کے بعد عوامی تحریک کی قیادت نے پی ٹی آئی رہنماﺅں سے رابطے کرلئے ہیں ۔تفصیلات کے مطابق مال روڈ پر اپوزیشن کے احتجاجی جلسے کے لیے تیاریاں شروع کردی گئی ہیں جلسے کے مجوزہ اسٹیج ، اپوزیشن رہنماﺅں کی آمد اور تقاریر جبکہ کارکنوں کیلئے پنڈال کے سائز اور کرسیوں کی تعداد کا فیصلہ کرلیا گیا ہے ۔ پنجاب اسمبلی کے سامنے فیصل چوک میں مرکزی سٹیج پر جلسے میں شریک تمام سیاسی جماعتوں کے سربراہان کوبیٹھایا جائے گا۔ جلسہ گاہ میں مرکزی قیادت کے لیئے 80 فٹ چوڑا سٹیج بنایا جائے گا۔ سٹیج کے پس منظر میں 40 فٹ چوڑی سکرین اور دونوں اطراف میں سانحہ ماڈل ٹاﺅن کے شہدا کی تصاویر سے مزین 20فٹ کی 2 فلیکسز آویزاں کی جائیں گی۔ جلسہ گاہ میں30 ہزار کرسیاں او ر 400لائیٹنگ پول لگائی جائیں گیں۔ مرکزی سٹیج کے سامنے سینئر رہنماﺅں کے لیئے200 صوفے لگائیں جائیں گے۔ پنڈال میں سینئر قیادت کے عقب میں خواتین کی کرسیاں اور آخر میں مرد کارکنان ہوں گے۔ مرکزی سٹیج کے سامنے دائیں طرف میڈیا کا کنٹینر رکھا جائے گا۔جلسہ گاہ میں چھ ایل ای ڈیز لگائی جائیں گئیں۔ڈاکٹر طاہرالقادری اپنی مرکزی قیادت کے ہمراہ اپنی بلٹ پروف کنٹینر میں ماڈل ٹاﺅن سے ریلی کی صورت میں جلسہ گاہ پہنچیں گے۔ جلسہ گاہ میں داخلے کے لیئے5راستے ہونگے۔ خواتین کا راستہ سی سی پی او کے آفس کی جانب سے جبکہ مردوں کا راستہ سٹیٹ بینک کی جانب سے ہوگا۔ مرکزی قیادت کا راستہ گورنر ہاﺅس کی جانب سے، سینئر قیادت کا راستہ ایجرٹن روڈ جبکہ میڈیا کا راستہ پنجاب اسمبلی کے مرکزی دروازے کی طرف سے ہوگا۔ ڈاکٹر طاہرالقادی کی خواہش پر ڈی جے ولی سن “ظالمو جواب دو، خون کا حساب دو” کا خصوصی گانا بھی تیار کر رہے ہیں۔دوسری جانب اپوزیشن جماعتوں کے باہمی اختلافات کے باعث ایک بار پھر تنازعات شروع ہوگئے ہیں ، پیپلز پارٹی کی قیادت تو واضح طورپر سابق صدر کی شرکت اور عمران خان کے ساتھ ایک اسٹیج پر بیٹھنے کا عندیہ دے چکی ہے تاہم تحریک انصاف کے چیئرمین نے ایک بار پھر واضح الفاظ میں سابق صدر آصف زرداری کے ساتھ ایک اسٹیج پر بیٹھنے سے انکار کردیا ہے ۔تحریک انصاف کے ترجمان فواد چوہدری کاکہنا ہے کہ عمران خان نے 17 جنوری کو پاکستان عوامی تحریک کے کنٹینر میں آصف زرداری کے ساتھ نہیں بیٹھیں گے ۔اب عمران خان اور آصف زرداری الگ الگ خطاب کریں گے۔عمران خان کے انکار کے بعد عوامی تحریک کی قیادت نے پی ٹی آئی رہنماﺅں سے رابطے شروع کردیئے ہیں اور عمران خان کو اپنے فیصلے پر نظر ثانی کرنے کی اپیل کی گئی ہے تاہم دوسری صورت میں جلسے سے قائدین کے خطاب کا شیڈول تبدیل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔عوامی تحریک نے تحریک انصاف اورپیپلزپارٹی کے ایک دوسرے سے متعلق تحفظات پر فیصلہ کیا ہے کہ آصف زرداری اور عمران خان الگ الگ وقت پر احتجاج میں شرکت اور شرکا سے خطاب کریں گے۔علاوہ ازیں پاکستان عوامی تحریک سنٹرل ورکنگ کونسل کا ہنگامی اجلاس سیکرٹری جنرل خرم نواز گنڈا پور کی زیر صدارت مرکزی سیکرٹریٹ میں منعقد ہوا،اجلاس میں 17جنوری کے احتجاج کے حوالے سے رابطہ کارکن مہم اور دیگر انتظامی امور کا جائزہ لیا گیا اور 14 انتظامی کمیٹیاں تشکیل دی گئیں،اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے خرم نواز گنڈا پور نے کہا کہ سب کان کھول کر سن لیں حصول انصاف کےلئے احتجاجی تحریک کا آغاز مال روڈ لاہور سے ہی ہو گا ،جس میں تمام سیاسی جماعتوں کی قیادت شریک ہو گی۔پاکستان کی تاریخ میں حکومتیں گرانے کےلئے سیاسی اتحاد بنتے رہے متحدہ اپوزیشن کا یہ احتجاج مظلوموں کو انصاف دلوانے اور قاتلوں کو انجام تک پہنچانے کےلئے ہے۔جسٹس باقر نجفی کمشن کی رپورٹ نے سانحہ ماڈل ٹاﺅن کا ذمہ دا ر شہباز شریف ،رانا ثناءاللہ ،بیورو کریٹس اور انکے حواریوں کو ٹھہرایا، شہباز شریف اور انکی حکومت سانحہ ماڈل ٹاﺅن کے انصاف کے راستے کی دیوار بنی ہوئی ہے اس دیوار کو اب عوام کی طاقت سے گرائیں گے ۔انہوں نے کہا کہ سانحہ ماڈل ٹاﺅن کے بعد شہباز شریف نے جتنے دن بھی اقتدار میں گزارے وہ جمہوریت پر دھبہ ہیں۔انہوں نے کہاکہ 16جنوری کو ایکشن کمیٹی کے اجلاس میں احتجاج کی جملہ تفصیلات جاری کر دی جائیں گی۔17جنوری کے احتجاج کے انتظامات کا جائزہ لینے کیلئے تحریک انصاف کے رہنماﺅں کا بھی اجلاس ہوا جس میں تحر یک انصاف کور کمیٹی کے رکن وسابق گور نر پنجاب چوہدری محمدسرور ‘ اپوزیشن لیڈر میاں محمودالرشید ‘سنٹر ل پنجاب کے صدر علیم خان ‘سابق وزیر خارجہ سردار آصف احمد علی ‘سابق صدر پنجاب تحر یک انصاف اعجاز احمد چوہدری سمیت دیگر نے شرکت کی ۔میاں محمودالرشید نے کہا کہ تحر یک انصاف عمران خان کی ہدایت کی مطابق سترہ جنوری کے احتجاج میں شریک ہونے کےلئے بھر پور تیاریاں کر رہی ہیں اور ا ب وقت آچکا ہے کہ منہاج القر آن مےں14بے گناہوں کو قتل کر نےوالے اپنے انجام سے دوچار ہوں اور حکمران بھی اپنے جرم کا حساب دیں ۔ عبد العلیم خان نے کہا کہ لاہور سمیت سنٹر ل پنجاب کے تمام پارٹی عہدےداروں اور کارکنوں کی احتجاج کو بھر پور انداز میں کامیاب بنانے کےلئے ہدایت جاری کر دیں ہیں اور اب حکمرانوں کے پاس بھاگنے کا کوئی راستہ نہیں انکو اپنے کر توتوں کا حساب دےنا ہی پڑ ےگا اور ہم عوام کےساتھ ملکر ان سے ہر ظلم اور ناانصافی کا حساب لیں گے۔

 


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.