پاکستان اورسعودی کامختلف شعبوں میں دوطرفہ تعاون کومزید فروغ دینے پراتفاق

اسلام آباد : پاکستان اور سعودی نے مختلف شعبوں میں دوطرفہ تعاون کومزید فروغ دینے پر اتفاق اور پاک سعودیہ مشترکہ بزنس کونسل کو فعال بنانے، سعودی سفارتخانے میں کمرشل اتاشی تعینات کئے جانے کا فیصلہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں ممالک ایک دوسرے کے ہاں نئی مصنوعات کی نمائشوں کا انعقاد اور بزنس ویزوں کے طریقہ کار کو آسان بنائیں گے ¾پاکستان کی پہلی سنگل کنٹری نمائش رواں سال سعودی عرب میں ہو گی، اسلام آباد میں سعودی سفارتخانے میں جلد ایک کمرشل اتاشی تعینات کیا جائے گا، پاکستان اور سعودی عرب دہشت گردی کے انسداد، منظم جرائم اور منی لانڈرنگ کی روک تھام کے شعبہ میں سکیورٹی انفارمیشن اور مہارت کا تبادلہ کریں گے۔ بدھ کو پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان مشترکہ وزارتی کمیشن کا11واں دو روزہ اجلاس یہاں اختتام پذیر ہو ا۔ وفاقی وزیر برائے تجارت و ٹیکسٹائل محمد پرویز ملک اور سعودی عرب کے وزیر برائے تجارت و سرمایہ کاری ڈاکٹر ماجد بن عبداللہ القاصبی نے مشترکہ طور پر اجلاس کی صدارت کی۔ دو روزہ اجلاس میں دونوں اطراف کے ماہرین نے مختلف امور بالخصوص تجارت، کاروبار، توانائی، قونصلر امور، تعلیم، صحت اور باہمی دلچسپی کے دیگر معاملات پر بات چیت کی۔ اجلاس کے اختتام پر دونوں ممالک کے درمیان سیشن کی دستاویز پر دستخط کئے گئے۔ اس موقع پر پاکستان کے وزیر برائے تجارت و ٹیکسٹائل محمد پرویز ملک اور سعودی عرب کے وزیر برائے تجارت و سرمایہ کاری ڈاکٹر ماجد بن عبداللہ القاصبی نے خطاب کیا اور مشترکہ وزارتی کمیشن کے اجلاس کے فیصلوں کے بارے میں آگاہ کیا۔ دو روزہ مشترکہ وزارتی اجلاس کے اعلامیہ کے مطابق مشترکہ وزارتی کمیشن کے 11ویں اجلاس میں دونوں فریقین نے ایک دوسرے کے ممالک میں نئی مصنوعات کی نمائشوں کے انعقاد پر اتفاق کیا اس سلسلے میں سعودی عرب میں پاکستان کی پہلی سنگل کنٹری نمائش رواں سال میں ہو گی۔ دونوں ممالک نے بزنس ویزہ کے اجراءپر نظر ثانی کرنے اور اس کے طریقہ کار کو آسان بنانے پر اتفاق کیا۔ اسی طرح بزنس ویزہ فیس کو بھی متناسب بنایا جائے گا۔ کمیشن نے پاک سعودیہ مشترکہ بزنس کونسل کو رواں سال کی پہلی سہ ماہی میں اس کے پہلے اجلاس کے انعقاد کے ذریعے فعال کرنے پر زور دیا گیا۔ کمیشن کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ اسلام آباد میں سعودی سفارتخانے میں جلد ایک کمرشل اتاشی تعینات کیا جائے گا۔ پاکستان نے سعودی عرب کی تیل و گیس کی کمپنیوں کے تعاون کی ضرورت پر زور دیا تاکہ پاکستان میں ریفائنریز کے قیام سمیت تیل کی پیداوار کو ترقی دی جاسکے۔ دونوں ممالک میں مرکزی بینکوں کے درمیان ایم او یو کو حتمی شکل دینے کے لئے مذاکرات تیز کرنے پر اتفاق ہوا ہے۔ علاوہ ازیں پاکستان اور سعودی عرب دہشت گردی کے انسداد، منظم جرائم اور منی لانڈرنگ کی روک تھام کے شعبہ میں سکیورٹی انفارمیشن اور مہارت کا تبادلہ بھی کریں گے۔ سزایافتہ قیدیوں کی منتقلی سے متعلق ڈرافٹ ایگریمنٹ پر جلد دستخط کئے جائیں گے۔ مشترکہ وزارتی کمیشن نے میڈیا کے شعبے سے وفود، ٹیلی ویژن کے ثقافتی پروگراموں و ڈاکومنٹریز کے تبادلے کی حوصلہ افزائی پر زور دیا۔ سعودی وفدنے بتایاکہ پاکستان میں افرادی قوت کی سعودی عرب کی ضروریات کے مطابق تربیت کے حوالے سے مراکز قائم کئے جائیں گے۔ اس موقع پر سائنسی تحقیق، ٹیکنالوجی اور تعلیم و صحت کے شعبوں میں سکالرشپس، تجربات اور تربیت کے لئے تعاون کو فروغ دینے پر اتفاق کیا گیا۔ مشترکہ وزارتی کمیشن نے پاکستان کی جانب سے سعودی عرب کی یونیورسٹیوں میں پاکستانی طلباءکے لئے سکالرشپس کی تعداد بڑھانے کی درخواست کی گئی۔ پاکستان نے سعودی عرب کو ایوی ایشن ٹریننگ انسٹیٹیوٹ حیدرآباد میں تربیت فراہم کرنے کی پیش کش کی ہے۔ سعودی عرب کی وزارت صحت کی جانب سے تربیت یافتہ پاکستانی میڈیکل کے عملہ کو ملازمتیں فراہم کرنے کی خواہش کا اظہار کیا گیا۔ اسی طرح تجارت، توانائی ،سرمایہ کاری، تعلیم اور زراعت سمیت مختلف شعبوں میں تعاون کے سلسلہ میں دونوں ممالک کی جانب سے شعبہ جاتی رابطہ کاری کے لئے فوکل پرسنز نامزد کرنے پر اتفاق کیا گیا۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.